انسانی حقوق کامنشور،عالمی دن

انسانی حقوق کامنشور،عالمی دن
 انسانی حقوق کامنشور،عالمی دن

  



10دسمبر کوانسانی حقوق کاعالمی دن اقوامِ متحدہ کی طرف سےعالمی سطح پر انسانی وقار برقرار رکھنے اور لوگوں میں انسانوں کے حقوق کے حوالے سےبیداری پیدا کرنے کی غرض سےمنایاجاتاہے ہیومن رائٹس ڈے منانے کامقصد دنیا بھرمیں انسانوں کو قابل احترام مقام دینے کامثبت پیغام دینا ہے اقوام متحدہ کے چارٹر میں واضع طورپرلکھا ہے کہ اقوام متحدہ کےلوگ یہ یقین رکھتے ہیں کہ کچھ ایسے انسانی حقوق ہیں جو کبھی چھینے نہیں جاسکتے جس میں انسانی وقار شامل ہے  اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں 10 دسمبر کوانسانی حقوق کا عالمی منشور منظور کرکے اسکا اعلان عام کیا اس تاریخی کارنامے کے بعد اسمبلی نے تمام ممبر ممالک پر زور دیا کہ وہ بھی اپنے اپنے ہاں اسکا اعلانِ عام کریں اسکی نشرواشاعت میں حصہ لیں مثلآ یہ کہ اسے نمایاں مقامات پرآویزاں کیا جاےء اور خاصکر اسکولوں اور تعلیمی اداروں میں اسے بڑھ چڑھکر سنایا جاےءاسکی تفصیلات واضع کی جائیں اور اس ضمن میں کسی ملک یا علاقے کی سیاسی حیثیت کے لحاظ سے کوئی امتیاز نہ برتا جاےء چونکہ ہر انسان کی زاتی عزت اور حرمت اور انسانوں کے مساوی اور ناقابل انتقال حقوق کو تسلیم کرنا دنیا میں آزادی انصاف اور امن کی بنیاد ہے چونکہ انسانی حقوق سے روگردانی اور لاپرواہی انکی بے حرمتی اکثر ایسے وحیشانہ افعال کی شکل میں ظاہر ہوتے ہیں جن سے انسانیت کے ضمیرکوسخت صدمے پہنچتے ہیں انسان کی بلند ترین آرزو یہی رہی ہے کہ ایسی دنیا وجود میں آئے جسمیں تمام انسانوں کو اپنی بات کہنے اور اپنے عقیدے پر قائم رہنے کی آزادی حاصل ہو اور خوف اور احتیاج سےمحفوظ رہے چونکہ یہ ضروری ہے کہ انسانی حقوق کو قانون کی عملداری کے زریعے محفوظ رکھا جائے قوموں کے درمیان دوستانہ تعلقات کو بڑھایا جاےء اقوام متحدہ کی ممبر قوموں نے اپنے چارٹر میں بنیادی انسانی حقوق انسانی شخصیت کی حرمت اور قدر اور مردوں ،عورتوں کے مساوی حقوق کے بارے میں اپنے عقیدے کی تصدیق کرچکاہے اور وسیع ترآزادی کی فضا میں معاشرتی ترقیکو تقویت دینے اور معیارزندگی کوبلند کرنے کااردہ بھی کرلیاگیاہے  اب یہ دیکھنا ہے کہ اس عہد کی تکمیل کےلیے بہت ہی اہم ہے کہ ان حقوق اور آزادیوں کی نوعیت کو سب سمجھ سکیں لہذا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اعلان کرتی ہے کہ انسانی حقوقکا یہ عالمی منشور تمام اقوام کے واسطے حصولِ مقاصد کامشترکہ معیار ہوگا تاکہ ہرفرداور معاشرے کاہر ادارہ اس منشور ہمیشہ پیشِ نظر رکھے اور اپنے قومی اور بین الاقوامی کارروائیوں کے زریعے ممبر ملکوں میں اوراُن قوموں میں جو ممبرملکوں ماتحت ہوں منوانے کےلیے بتدریجکوشش کرسکے۔ 

.

نوٹ:یہ بلاگر کا ذاتی نقطہ نظر ہے جس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں ۔

.

اگرآپ بھی ڈیلی پاکستان کیساتھ بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو اپنی تحاریر ای میل ایڈریس ’dailypak1k@gmail.com‘ یا واٹس ایپ "03009194327" پر بھیج دیں۔

مزید : بلاگ