سول و فوجداری مقدمات پہلے آئیے پہلے لگائیے کی بنیاد پر مقرر ہونگے :سپریم کورٹ

سول و فوجداری مقدمات پہلے آئیے پہلے لگائیے کی بنیاد پر مقرر ہونگے :سپریم کورٹ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                                        اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )سپریم کورٹ کے چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی زیر صدارت "پریکٹس اینڈ پروسیجر قانون" کے تحت کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ سول اور فوجداری مقد ما ت ’پہلے آئیے پہلے لگائیے‘ کی بنیاد پر مقرر ہونگے۔چیف جسٹس سپریم کورٹ قاضی فائز عیسیٰ کی زیر صدارت پریکٹس اینڈ پروسیجر قانون کے تحت کمیٹی کا اجلاس ہوا۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سول اور فوجداری مقدمات ’پہلے آئیے پہلے لگائیے‘ کی بنیاد پر مقرر ہوں گے۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آرٹیکل 184(3) کے تحت دائر درخواستیں جائزہ لینے کے بعد عدالت میں فکس کی جائیں گی، سپریم کورٹ کی اس کمیٹی کا اگلا اجلاس 4 جنوری کو ہوگا۔اعلامیہ کے مطابق کمیٹی نے 18 تا 29 دسمبر تمام رجسٹریوں میں ببنچز کی تشکیل کا فیصلہ کر لیا، 18تا 22 دسمبر اسلام آباد،کوئٹہ اور کراچی رجسٹری میں ایک ایک بینچ مقدمات کی سماعت کرےگا۔اسلام آباد رجسٹری میں جسٹس سردار طارق ،جسٹس منصور علی، جسٹس اطہر من اللہ پر مشتمل بینچ ہوگا، کوئٹہ رجسٹری میں بینچ جسٹس یحییٰ آفریدی اور جسٹس جمال مندوخیل پر مشتمل ہوگا جبکہ کراچی رجسٹری بینچ میں جسٹس محمد علی مظہر، جسٹس حسن اظہر رضوی اور جسٹس عر فا ن سعادت خان بھی شامل ہونگے۔26 تا 29 دسمبر تک جسٹس سردار طارق مسعود چیمبر ورک کرینگے، 26 تا 29 دسمبر پشاور رجسٹری بینچ جسٹس امین الدین اور جسٹس مسرت ہلالی پر مشتمل ہوگا۔

سپریم کورٹ

مزید :

صفحہ اول -