طالبان کے پیش کیے جانیوالے زیادہ تر مطالبات قابل عمل ہیں، ساجد میر

طالبان کے پیش کیے جانیوالے زیادہ تر مطالبات قابل عمل ہیں، ساجد میر

  

لاہور (سٹاف رپورٹر)مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے آئین پاکستان میں شریعت کو ہی بالادستی حاصل ہے ضرورت صرف عمل درآمد کی ہے۔ ایک صالح اور عادل معاشرے کی تشکیل کے لیے اسلامی کلچر پیدا کرنا ہو گا۔علماءکے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کمیٹیوں کو مذاکرات کی ناکامی کی صورت میں ہونے والی تباہی کا انداز ہ ہے، اس لیے وہ اخلاص اور سنجیدگی کے ساتھ اپنا کام کررہی ہیں۔طالبان کی طرف سے جو مطالبات سامنے آئے ہیں ان میں زیادہ تر قابل عمل ہیں،امن کو موقع ملنے جا رہاہے۔ ریاستی عمل داری میں کمزوری کی وجہ سے غیر اسلامی اقدار فروغ پا رہی ہیں۔ طالبان دشمنی میں اسلام اور اسلامی اقدار کا مذاق اڑانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔پاکستان کا قانو ن اسلامی ہے جبکہ کلچر غیر اسلامی بنتا جارہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں قانو ن سازی کا اختیار صرف پارلیمنٹ کو حاصل ہے، کسی مسلح گروہ کو انفرادی حیثیت میں قانون سازی کا اختیار نہیں دیا جاسکتا۔ طالبان سمیت کوئی بھی گروہ اپنی خواہش کے مطابق کوئی قانون لانا چاہتا ہے تو وہ پارلیمنٹ کے ذریعے ہی ممکن ہو سکتا ہے۔ طالبان کو بلٹ کی بجائے بیلٹ کا راستہ اپنانا ہو گا ۔بیلٹ کے ذریعے اقتدار میں آئیں انہیں خوش آمدید کہیں گے۔

ساجد میر

مزید :

صفحہ آخر -