پی سی بی آئین معطل، ذکاءاشرف عہدے سے فارغ، نجم سیٹھی چارماہ کے لئے پی سی بی کے چیئرمین بن گئے، انتظامی کمیٹی کا باقاعدہ اجلاس کل طلب، جمہوری حکومت نے غیر جمہوری فیصلہ کیا: ذکاءاشرف

پی سی بی آئین معطل، ذکاءاشرف عہدے سے فارغ، نجم سیٹھی چارماہ کے لئے پی سی بی کے ...

ٹیلی فون پر معطلی کا پتہ چلا، نوٹیفکیشن ملنے کے بعد عدالت جانے یا نہ جانے کافیصلہ کروں گا: سابق چیئرمین پی سی بی

پی سی بی آئین معطل، ذکاءاشرف عہدے سے فارغ، نجم سیٹھی چارماہ کے لئے پی سی بی کے چیئرمین بن گئے، انتظامی کمیٹی کا باقاعدہ اجلاس کل طلب، جمہوری حکومت نے غیر جمہوری فیصلہ کیا: ذکاءاشرف
کیپشن:   Najam Sethi

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کا گورننگ بورڈ تحلیل، آئین معطل کر کے چیئرمین ذکاءاشرف کو عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے اور ان کی جگہ نجم سیٹھی کو ایک بار پھر پی سی بی کا چیئرمین بنا دیا گیا ہے جبکہ انتظامی کمیٹی کا باقاعدہ اجلاس کل طلب کر لیا گیا ہے۔ پی سی بی کے ترجمان نے نجم سیٹھی کو چیئرمین بنائے جانے کی تصدیق کر دی ہے۔ عہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نجم سیٹھی نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کی انتظامی کمیٹی کا اجلاس کل ہو گا، ارکان نے ایس ایم ایس اور ای میل کے ذریعے مجھے منتخب کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ایڈہاک کمیٹی 4 ماہ کیلئے بنائی گئی ہے تاہم ہم کوشش کریں گے کہ جلد از جلد نیا آئین بنایا جائے اور اس کے تحت چیئرمین کا انتخاب کیا جائے۔ قبل ازیں پی سی بی کے معطل ہونے والے چیئرمین ذکاءاشرف نے کہا ہے کہ جمہوری حکومت نے انہیں عہدے سے ہٹا کر غیر جمہوری فیصلہ کیا ہے، جمہوری حکومت کے ہاتھوں جمہورت کا قتل کیا گیا، نوٹیفکیشن ملنے کے بعد عدالت جانے سے متعلق فیصلہ کروں گا۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے پیٹرن پی سی بی آئین کی ایک شق میں ترمیم کردی ہے جس کا بین الصوبائی رابطے کی وزارت نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ پی سی بی کے معاملات چلانے کیلئے 11رکنی عبوری انتظامی کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو آئندہ چند دنوں کے دوران چیئرمین کا تقررکرے گی۔ کمیٹی نجم سیٹھی، شہریار خان، ظہیر عباس، نوید قمر، شکیل شیخ، اقبال قاسم، یوسف کھوکھر اور عامر طارق زمان پرمشتمل ہے۔مقامی ہوٹل میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ذکاءاشرف نے کہاکہ معاملات کا باریک بینی سے جائزہ لے رہے ہیں ، باضابطہ طورپر آگاہ نہیں کیاگیا، نوٹیفکیشن ملنے کے بعد عدالت جانے یانہ جانے کافیصلہ کریں گے۔ان کاکہناتھاکہ فیصلے سے بگ تھری پر پاکستان کرکٹ بورڈ کا موقف مزید کمزور ہوسکتاہے ، فیصلے کا براہ راست فائدہ بھارت کو پہنچے گا۔جیونیوز کے مطابق انہوں نے کہاکہ وہ بدستور چیئرمین ہیں ، ایسافیصلہ نہیں ہوناچاہیے تھاتاہم جلد بازی میںہونیوالے حکومت کے فیصلے سے عہدے پر کوئی اثر نہیں پڑسکتا،پاکستان کی کرکٹ کو عالمی سطح پر مسائل میں جھونکا جارہاہے ، فیصلے پر باقاعدہ ردعمل کمیٹی کا رویہ دیکھ کر دوں گا۔ تقریب سے خطاب میں ذکااشرف نے کہاکہ بگ تھری کی وجہ سے چھوٹے ممالک کو نقصان ہوگا، کرکٹ سے پیسہ آتاہے ، پیسے سے کرکٹ نہیں ، 10سال بعد پتہ چلے گاکہ پاکستان نے درست فیصلہ کیا، حکومتی فیصلے سے پاکستانی موقف متاثر ہوگا۔ ذکاءاشرف نے کہا کہ کرکٹ بورڈ میں بار بار تبدیلیوں سے دنیا کو منفی پیغام گیا اور آسٹریلیا نے پہلے بھی تنقید کی تھی کہ پاکستان اور پی سی بی میں استحکام نہیں ہے جبکہ آئی سی سی بھی چاہتا ہے کہ حکومت کا بورڈ کے معاملات سے تعلق نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ پی سی بی کا آئین ہم نے ایک سال میں بنایا جس کے بعد آئی سی سی کے حکامات کے مطابق اس پر عملدرآمد بھی کرایا۔ جو آئی سی سی پہلے تھا وہ اب نہیں رہا، اب بھارت آئی سی سی کا سربراہ ہے اور اس کا اثر و رسوخ بھی زیادہ ہے۔ ذکاءاشرف نے کہا کہ وہ ملک سے باہر تھا اوران کی عدم موجودگی میں کمیٹی بنائی گئی اور ان کے خلاف خود ساختہ جواز اختیار کیا گیا، عہدے سے ہٹا کر کرکٹ اور مداحوں کے خلاف فیصلہ کیا گیا، قانونی مشاورت کے بعد پتہ چلے گا کہ کمیٹی کی حیثیت کیا ہے،قانونی مشاورت کے بعد حکومتی فیصلے پر موقف دوں گا۔سابق چیئرمین کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ کی بہتری کیلئے فیصلے کئے، ان کے دور میں کرپشن نہیں کی گئی، وزیراعظم نواز شریف کرکٹ کے پیٹرن انچیف ہیں، بگ تھری کے معاملے پر ان سے ملاقات کر کے رہنمائی لینا چاہتا تھا۔ بتایاگیاہے کہ ذکااشرف پیر کو سنگاپور سے پاکستان پہنچے ہیں اور انہوں نے آج قومی ٹیم کااعلان کرناتھا۔ کمیٹی کے رکن شکیل شیخ نے بتایا کہ پی سی بی کا آئین معطل کرکے عمل دخل اور پابندیاں ختم کردی گئی ہیں ، چند دن میں وائٹ پیپر جاری کریں گے اور کمیٹی کے اراکین میں سے ایک کو چیئرمین منتخب کر لیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ وہ نجم سیٹھی اور وزیراعظم کے مشکور ہیں جنہوں نے ذکاءاشرف کو عہدے سے ہٹاکر کرکٹ کو بچالیا، ذکاءاشرف نے پاکستان کو تنہاکرنے کی کوشش کی۔ ماہرین کرکٹ گذشتہ چند روز کے دوران ہونیوالی دھڑا دھڑ تقرریوں پر بھی سوال اٹھارہے ہیں اور امکان ظاہرکیاجارہاہے کہ تمام تقرریوں کو کالعدم قراردے دیاجائے گا۔ یاد رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے کچھ دن قبل ہی ذکا اشرف کو چیئرمین پی سی بی بحال کیاتھا۔

مزید :

کھیل -Headlines -