چین دنیا بھر میں تیسری بڑی بیمہ منڈی بن گیا

چین دنیا بھر میں تیسری بڑی بیمہ منڈی بن گیا

  

بیجنگ (آن لائن)سی آئی آر سی کے اعدادوشمار کے مطابق ایک اعشاریہ ایک تین فیصد کی سالانہ پیداواری شرح کے ساتھ بیمہ پریمئم 2010میں تین اعشاریہ ایک ٹریلین یو آن یعنی تقریباًاعشاریہ ایک نو سات ملین امریکی ڈالر سے بڑھ کر 2015میں چار اعشاریہ دو ٹریلین یو آن ہوگئی ۔ چینی خبررساں ادارے کی ایک رپورٹ کے مطابق دنیا کی دوسری بڑی معیشت میں فروخت پذیر بیمہ مارکیٹ کے ساتھ چین میں پوری بیمہ صنعت کے مجموعی اثاثے 2010میں 5ٹریلین یو آن سے بڑھ کر 2015میں 12ٹریلین یو آن ہو گئے یعنی ڈبل سے بھی زیادہ۔ماہرین نے صنعت کی اس کارکردگی کو چین کی بڑھتی معیشت اور عوامی معیار زندگی میں بہتری قرار دیا ہے۔اس قسم کی فروخت پذیر مارکیٹ کے پس منظر میں بیمہ کمپنیوں نے ملک میں زبردست برسوں کا تجربہ کیا ہے۔

2015میں پورے بیمہ شعبہ کا منافع مجموعی طور پر چار اعشاریہ دو آٹھ دوبلین یوآن رہا جبکہ2010میں جب چین دنیا کی چھٹی بڑی بیمہ منڈی تھا منافع صرف سات اعشاریہ آٹھ تین بلین یو آن تھا۔سی آئی آرسی اعدادوشمار کے مطابق 2015میں چین کا حصہ عالمی بیمہ منڈی پیداوار کا 26فیصد تھا۔

مزید :

کامرس -