مدارس پر چھاپے اور علماء کرام کی گرفتاریاں قابل مذمت ہیں،میاں مقصود

مدارس پر چھاپے اور علماء کرام کی گرفتاریاں قابل مذمت ہیں،میاں مقصود

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیرجماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدنے کہاہے کہ قومی ایکشن پلان کی آڑ میں دینی مدارس پر چھاپے اور علماء کرام کی گرفتاریوں کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ دہشتگردی کی حالیہ کارروائیوں میں امریکہ،بھارت اور دیگر بیرونی قوتوں کاہاتھ ہے مگر افسوس صد افسوس حکومت نے امریکہ کو خوش کرنے کے لئے صوبہ پنجاب میں تعلیمی اداروں میں تبلیغ اور درس قرآن پر پابندی کافیصلہ کیا ہے۔دینی مدارس پر چھاپے اور گرفتاریاں بندکی جائیں تاکہ دینی حلقو ں میں تشویش واضطراب کاخاتمہ ہوسکے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف ملکی تعلیمی اداروں میں کلچرکے نام پرعریانی وفحاشی کاسیلاب امڈ آیاہے تودوسری جانب طلبہ کو اسلام اور اس کی تعلیمات سے روشناس کرنے پر پابندی درحقیقت بہت بڑاالمیہ ہے ۔

۔ ایک ایسا ملک جسے کلمہ طیبہ کے نام پر حاصل کرکے اس کا نام اسلامی جمہوریہ پاکستان رکھا گیا وہاں اسلامی وتبلیغی سرگرمیوں کوممنوع قراردینا عذاب الٰہی کودعوت دینے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت تعلیمی اداروں میں دعوت وتبلیغ پرلگائی جانے والی پابندی کے فیصلے کوفی الفور واپس لے۔ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت اسلام کودہشت گردی سے جوڑا جارہا ہے جوکہ دشمنوں کایجنڈا ہے۔اسلام محبت اور بھائی چارے کادرس دیتا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -