حکومتی پالیسیوں اور سکیورٹی اداروں کی قربانیوں سے آج حالات بہتر ہیں: پرویز رشید

حکومتی پالیسیوں اور سکیورٹی اداروں کی قربانیوں سے آج حالات بہتر ہیں: پرویز ...

  

کوہاٹ (آئی این پی) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ اڑھائی برس قبل لوگوں میں مایوسی تھی، حکومتی پالیسیوں اور قومی و سلامتی کے اداروں کی قربانیوں سے آج حالات بہتر ہیں،لوگوں کی زندگی میں تبدیلی و ترقی لانا حکومت کی اولین ترجیح ہے،اتحاد سے ہی کامیابیاں حاصل ہوں گی،بجلی کی پیداواری صلاحیت کو آئندہ برس میں دوگنا کیا جائے گا، نئے منصوبوں سے حاصل ہونے والی بجلی پورے ملک کیلئے ہو گی، آئندہ صوبائی حکومت بنی گالہ سے بیٹھ کر نہیں چلائی جا سکی گی،عمران خان کو مسئلے کا حل بننا چاہیے نہ کہ وہ مسئلے کا حصہ بنیں، ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے سے دنیا آگے نکل جائے گی اور ہم پیچھے رہ جائیں گے، راہداری منصوبے پر سازش کرنا چین جیسے محسن ملک کی دل آزاری کرنا ہے،راولپنڈی سے کوہاٹ تک آیا لیکن کہیں درخت نظر نہیں آئے، عمران خان کے شجرکاری منصوبے کا آڈٹ 2018ء کے انتخابات میں کریں گے، آئندہ انتخابات میں عمران خان کو اپنی کاکردگی بھی دیکھائیں گے اور ان کی کارکردگی بھی دیکھیں گے، عمران خان خود بھی کام کریں اور ہمیں بھی کام کرنے دیں، ہمارے قلم سے نکلا قانون کالا اور عمران خان کے قلم سے نکلا وہی قانون سفید ہو جاتا ہے۔ وہ منگل کو یہاں عوامی اجتماع سے خطاب کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔اس موقع پر سینیٹر پرویز رشید نے بلدیاتی نمائندوں سے ملاقات کر کے عوامی مسائل بھی معلوم کئے۔ وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ 2013ء کے مقابلے میں آج کا پاکستان بہت بہتر ہے، اڑھائی برس قبل لوگوں میں مایوسی تھی، حکومتی پالیسیوں اور قومی و سلامتی کے اداروں کی قربانیوں سے آج حالات بہتر ہیں،لوگوں کی زندگی میں تبدیلی و ترقی لانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم نواز شریف کی پالیسیوں کی وجہ سے عوام کی آنکھوں میں آج امید ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج دہشت گردی کے واقعات کم ہیں، نیشنل ایکشن پلان پر عمل ہو رہا ہے،پہلے دہشت گردی کے واقعات کو روکنے کیلئے نظام وضع نہیں تھا لیکن اب دہشت گردی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان کی شکل میں نظام وضع ہے،دہشت گردی کے واقعات پر پورے ملک کو دکھ اور افسوس ہوتا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -