شہباز شریف کا بھٹوں پر کام کرنیوالے بچوں کی مکمل کفالت کا اعلان

شہباز شریف کا بھٹوں پر کام کرنیوالے بچوں کی مکمل کفالت کا اعلان

  

لاہور(جنرل رپورٹر ) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف بغیر کسی پیشگی اطلاع کے اچانک لاہور سے 33 کلومیٹر دور نواحی گاؤں جیابگا پہنچ گئے، جہاں انہوں نے اپنا ہیلی کاپٹر اینٹوں کے بھٹے کے قریب کھیتوں میں اتار لیا۔ وزیراعلیٰ شہبازشریف کے اس اچانک چھاپے کا مقصد بھٹہ خشت پر بچوں سے لی جانیوالی مزدوری کے خاتمے کے بارے میں حکومت پنجاب کے فیصلے پر عملدرآمد کی صورتحال کا جائزہ لینا تھا۔ وزیراعلیٰ نے نواحی گاؤں میں کئی گھنٹے تک 3 مختلف اینٹوں کے بھٹوں کا تفصیلی معائنہ کیا اور وہاں کام کرنے والے مزدوروں سے مفصل سوال جواب کئے۔ بھٹہ مزدوروں نے وزیراعلیٰ شہبازشریف سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اینٹوں کے بھٹوں پر کام کرنے والے بچوں کو مشقت سے نجات دلانے اور سکول جانے والے بچوں کیلئے ماہانہ ایک ہزار روپے وظیفہ اور ان کے والدین کو 2 ہزار روپے دینے کا فیصلہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت کا ایک غریب پرور فیصلہ ہے اور یہ احسن اقدام ہمارے خاندانوں کی قسمت بدل کر رکھ دے گااورہمیں ظالمانہ نظام سے نجات ملے گی۔ وزیراعلیٰ شہبازشریف نے ایک بھٹے پر 13 سالہ بچے محمد دانش کو مزدوری کرتے دیکھ کر سخت برہمی کا اظہار کیا اور بھٹہ مالک کی سرزنش کی۔ انہوں نے کہا کہ محمد دانش کو اس بھٹے کی بجائے دانش سکول ہونا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ بھٹہ مالکان سختی کا موقع نہیں آنے دیں گے اور وہ ان بچوں کی تعلیم میں ممد و معاون ثابت ہوں گے کیونکہ یہ بچے قوم کا مستقبل ہیں اور ہم انہیں پیشگی معاوضوں کے ذریعے کسی کے ہاتھ گروی رکھنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ وزیراعلیٰ نے بھٹوں پر کام کرنے والے بچوں کی مکمل کفالت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ جب تک بھٹوں پر کام کرنے والا آخری بچہ بھی سکول نہیں پہنچ جاتا، میں آرام سے نہیں بیٹھوں گا۔ بھٹوں پر کام کرنے والے بچوں کو تعلیم دلانا ایک قومی مقصد ہے اور پنجاب حکومت نے اس مقصد کیلئے کروڑوں روپے مختص کئے ہیں۔بچوں کی تعلیم کیلئے جتنے بھی مزید وسائل درکار ہوں گے، ہم مہیا کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ سکول جانے والے ہر بچے کو ایک ہزار روپے ماہانہ وظیفہ دینے کے ساتھ تمام تعلیمی اخراجات برداشت کئے جائیں گے۔ سکول جانے والے بچے کو مفت یونیفارم، کتابیں اورسٹیشنری دیئے جائیں گے جبکہ دور دراز کے علاقوں کے بچوں کو ٹرانسپورٹ کی سہولت بھی فراہم کی جائے گی اور سکول جانے والے بچوں کے والدین کو 2 ہزار روپے دیئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس ظالمانہ نظام کو ختم کرکے دم لیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب کو دیکھ کر نواحی گاؤں میں رہنے والے لوگوں اور بھٹہ مزدوروں نے خوشگوار حیرت کا اظہار کیا اور ’’شہبازشریف زندہ باد‘‘ کے نعرے لگائے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں پاکستان میں ملائشیا کے ہائی کمشنر ڈاکٹرحسرل ثانی بن مجتب نے ملاقات کی جس میں باہمی دلچسپی کے امور، دو طرفہ تعلقات اور مختلف شعبوں میں تعاون کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں معاشی و تجارتی تعلقات خصوصاً لائیوسٹاک، زراعت اور حلال فوڈ کے شعبوں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ملائشیا کے درمیان بہترین برادرانہ اور تجارتی تعلقات قائم ہیں۔دونوں ملکوں کے مابین معاشی و تجارتی تعلقات میں اضافہ ہو رہا ہے خصوصاً لائیوسٹاک، حلال فوڈ، توانائی،معدنیات، انفراسٹرکچر اور زراعت کے شعبوں میں بڑھتے ہوئے تعاون میں مزید اضافے کی بے پناہ گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملائشیا نے پچھلے چند سالوں میں نمایاں ترقی کی ہے جو کہ ترقی پذیر ممالک کیلئے ایک رول ماڈل کی حیثیت رکھتی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب میں غیرملکی سرمایہ کاروں کیلئے ترجیحی بنیادوں پر سہولتیں فراہم کر رہے ہیں۔ 2013 کے مقابلے میں پاکستان کی معیشت تیزی سے ترقی کر رہی ہے۔ ملائشیا کے سرمایہ کار پنجاب میں سرمایہ کاری کریں،ہرممکن مراعات اور سہولتیں دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دو طرفہ تعلقات کو مزید بڑھانے کیلئے پاکستان اور ملائشیا کے درمیان تجارتی وفود کے زیادہ سے زیادہ تبادلے ہونے چاہئیں اور اس ضمن میں پاکستان اور ملائشیا کو فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ دونوں ملکوں کے تجارتی وفود کے تسلسل کے ساتھ تبادلے معاشی تعلقات کے فروغ میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔ ملائشین ہائی کمشنر ڈاکٹرحسرل ثانی بن مجتبرنے اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ملائشیا کا اہم تجارتی پارٹنر ہے ۔ پاکستان کے ساتھ تجارتی تعلقات کو مزید فروغ دینے کے خواہاں ہیں کیونکہ موجودہ حکومت کے دور میں غیرملکی سرمایہ کاروں کے اعتماد میں اضافہ ہوا ہے اور ملائشیا کے سرمایہ کار بھی پاکستان خصوصاً پنجاب میں سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں۔ ملائشین ہائی کمشنر نے وزیراعلیٰ شہبازشریف کے کام کرنے کی غیرمعمولی صلاحیتوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ آپ کی انتھک محنت کو نہ صرف پاکستان بلکہ بیرون ملک بھی سراہا جاتا ہے۔ بلاشبہ آپ جس عزم کے ساتھ عوام کی خدمت کر رہے ہیں وہ قابل ستائش ہے اور پنجاب میں غیرملکی سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے بھی آپ نے بہترین اقدامات کئے ہیں۔وزیراعلی پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ پنجاب کی ترقیاتی حکمت عملی 2018کے تحت سالانہ شرح ترقی کا ہدف 8فیصد مقرر کیا گیا ہے ۔ آئندہ اڑھائی برسوں میں 20لاکھ ہنرمند افرادی قوت تیار کرنے کا ہدف پورا کیا جائے گا۔وزیراعلی پنجاب محمدشہبازشریف نے عالمی بینک کے صدر جم یونگ کم(Mr.Jim Yong Kim) سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کو محفوظ ،معاشی طورپر مضبوط صوبہ بنانا ہمار امشن ہے ۔عالمی بنک کے صدر نے وزیراعلی شہباز شریف سے ملاقات کے دوران پنجاب حکومت کے ساتھ قابل تجدید ذرائع سے توانائی کے منصوبوں ‘ تعلیم‘ صحت اور دیگر شعبوں میں ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ وزیراعلی محمد شہباز شریف اہداف متعین کرکے نتائج حاصل کرنے کی پالیسی پر کامیابی سے عمل پیرا ہیں۔محمد شہباز شریف کی متاثرکن قیادت میں پنجاب نے مثالی ترقی کی ہے ہم پنجاب حکومت کے ساتھ مستقبل میں قریبی رابطے رکھتے ہوئے تعاون کو فروغ دیں گے۔عالمی بنک کے صدر جم یونگ کم نے وزیراعلٰی پنجاب محمد شہبازشریف کے کام کرنے کی غیرمعمولی صلاحیتوں کی تعریف کی۔وزیراعلی پنجاب محمدشہباز شریف نے عالمی بنک کے صدر سے ملاقات کرتے ہوئے کہا کہ توانائی بحران پر قابو پاکر سرمایہ کاری کے ہدف میں اضافہ ترقیاتی حکمت عملی کا اہم جزوہے ۔ صوبے میں گیس سے چلنے والے 3600میگاواٹ بجلی کے کارخانے لگائے جارہے ہیں، توانائی منصوبوں میں شفافیت کی اعلی مثال قائم کرتے ہوئے112ارب روپے کے قیمتی قومی وسائل بچائے گئے ہیں۔وزیراعلی نے کہا کہ صوبے میں عالمی معیار کا جدید انفراسٹرکچربھی بنایا جارہا ہے ۔صوبہ بھر میں4کلومیٹردیہی سڑکوں کی تعمیر و مرمت اور بحالی کا منصوبہ کامیابی سے جاری ہے ۔انہوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے عوام کی خوشحالی اورخدمات میں بہتری لائی جارہی ہے،ای ۔گورننس کو فروغ دیتے ہوئے سرکاری اداروں کی کارکردگی بہتر کرنے اور عوام کو تیز ترین خدمات کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے سٹیزن فیڈ بیک مانیٹرنگ پروگرام پر عملدرآمد کامیابی سے جاری ہے ۔وزیراعلی نے عالمی بنک کے صدر سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت پنجاب عوام کو باوقار اور محفوظ،آرام دہ ،باکفایت اورعالمی معیار کی سفری سہولتیں فراہم کرنے کیلئے موثر اقدامات کررہی ہے۔لاہور اور راولپنڈی میں روزانہ لاکھوں افراد جدید میٹروبس سروس سے استفادہ کررہے ہیں ۔ملتان میں میٹروبس کے منصوبے پر تیزرفتاری سے کام جاری ہے ۔ صوبائی دارلحکومت میں چین کے تعاون سے لاہور اورنج لائن میٹروٹرین کا منصوبہ شروع کیاگیا ہے ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبے میں میرٹ اورشفافیت کی پالیسی پر سختی سے عمل کیا جارہا ہے ۔تعلیم سمیت تمام اداروں میں بھرتیاں صرف اورصرف میرٹ کی بنیاد پر کی جارہی ہیں۔ایک لاکھ اساتذہ مکمل شفافیت اورمیرٹ پر بھرتی کیے گئے ہیں ۔وزیراعلیٰ نے ورلڈ بنک کے صدر جم یونگ کم کو چائلڈ لیبر کے خاتمے کے لئے حکومت پنجاب کی خدمات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ بھٹہ پر کام کرنے والے 30ہزاربچوں کو سکولوں میں داخلہ دیا گیا ہے ۔ عوام کو صحت کی سہولتوں کی فراہمی کیلئے صوبے کی تاریخ کا سب سے بڑا بجٹ دیا گیا ہے ۔ہیلتھ سروسز کی جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے مانٹیرنگ کی جارہی ہے ۔وزیراعلی نے کہا کہ عالمی بنک کے ساتھ مستقبل میں مزید قریبی رابطہ رکھتے ہوئے تعاون کو فروغ دیں گے۔پاکستان کو آگے لے جانے کے لئے اجتماعی بصیرت سے دن رات محنت کریں گے۔وزیراعلی پنجاب محمدشہباز شریف سے عالمی بنک کے صدر کی ملاقات کے دوران متعلقہ حکام بھی موجودتھے۔

مزید :

صفحہ اول -