مردان میں ہسپتالوں میں لازمی سروس ایکٹ کیخلاف ہڑتال

مردان میں ہسپتالوں میں لازمی سروس ایکٹ کیخلاف ہڑتال

  

مردان(بیورورپورٹ)پشاور ڈویژن میں کے میڈیکل کالجوں سمیت تمام چھوٹے بڑے ہسپتالوں میں لازمی سروس ایکٹ اور ہسپتالوں کی نجکاری کے خلاف کامیاب ہڑتال محکمہ صحت کے جملہ تنظیمات سمیت مبارکباد دی گئی اور صوبائی حکومت خیبرپُختونخواہ کو ایک بار پھر خبردار کرتے ہوئے پرزور مطالبہ کہ حکومت وقت دوغلہ پالیسیوں سے باہر نکل کر محکمہ صحت میں لازمی سروس ایکٹ جیسے کالے قانون کو واپس لے اور اصلاحات کے نام پر ہسپتالوں کی نجکاری اور ایمپوریڈ من پسند پرائیویٹ افراد کو انتظامی امور کی بندر بانٹ بند کردیں۔ اور محکمہ صحت کے جملہ ملازمین کو پروفیشنل ہیلتھ الاونس کا فی الفور اجرا کریں۔ انصاف کے نام پر قائم حکومت خیبر پختونخوا کے غریب عوام کش نت نئے پالیسیوں کی بدولت غریب عوام پر سرکاری ہسپتالوں کے دروازیں بند نہ کریں۔ آج حکومت کو محکمہ صحت کے جملہ سٹاف نے آئینہ دکھا دیا اگر پھر بھی حکومت اپنی غلط پالیسیوں سیباز نہ آیا تو کل صوبہ بھر کی طرح مردان ڈویژن کے میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز سمیت تمام چھوٹے بڑے ہسپتالوں میں غیر معینہ مدت تک ہڑتال شروع کی جائیگی تاہم ایمرجنسی کور دیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار ڈویژنل صدر شرافت اللہ یوسفزئی کے علاوہ پی ایم اے ضلع مردان کے صدر پرویز خان جنرل سیکرٹری فضل قیوم ڈی ایچ کیو ؍ ایم ایم سی کے صدر تاج محمد ڈی ایچ کیو ہسپتال درجہ چہارم کے صدر مردان کے صدر عالم زیب ایم ایم سی کے درجہ چہارم کے صد ر سرتاج مایار ، بی کے ایم سی درجہ چہارم کے جنرل سیکرٹری بلال احمد ضلع مردان کے صدر نصیر احمد نیایک اخباری بیان میں کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ اول -