ضلعی انتظامیہ کے محکمہ مال میں پٹواری مافیا کی اجارہ دری ختم نہ ہوسکی

ضلعی انتظامیہ کے محکمہ مال میں پٹواری مافیا کی اجارہ دری ختم نہ ہوسکی

  

اسلام آباد (کرائم رپورٹر )ضلعی انتظامیہ کے محکمہ مال میں پٹواری مافیا کی اجارہ دری ختم نہ ہوسکی عہدے سے ہٹائے جانے کے باوجود سابق تحصیلدار امتیاز جنجوعہ کی حکمرانی آج بھی قائم خاتون ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرریونیو رابعہ اورنگزیب نے بھی آنکھیں بند کرلیں تفصیلات کے مطابق لال اختر عابد نامی ایک شخص نے ڈپٹی کمشنر کیپٹن ریٹائرڈ مشتاق احمد کو درخواست دی کہ اسلام آباد کے موضع ریاڑ میں دوسرے فریق سے تئیس کنال سات مرلے کا تنازعہ تھا جس پر سول جج کی عدالت بے حکم امتناعی جاری کیا تو اس وقت کری سرکل کے پٹواری اشفاق خان کنڈی نے انتقال رجسڑمیں حکم امتناعی اندراج نہیں کیا اس دوران کری سرکل میں حاجی مختار پٹواری کا تبادلہ ہوا تو انھیں حکم امتناعی کی مصدقہ نقول فراہم کیں تو اس نے رجسٹر میں کچی پینسل سے اندراج کیا، ڈپٹی کمشنر کے حکم پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر عبدالستار ایسانی بے انکوائری کی اور ثابت ہونے پر پٹواری کے خلاف محکمہ کاروائی کی سفارش کی ، ڈی سی اسلام آباد نے خاتون ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر رابعہ اورنگزیب کو ضابطہ کے مطابق کاروائی کا حکم دیا مگر خاتون آفیسررابعہ اورنگزیب نے کوئی ایکشن لینے کی بجائے حاجی مختار پٹواری کو کری سرکل سے تبدیل کرکے اشفاق خان کنڈی کوہی کری سرکل میں تعینات کردیا جبکہ انتقال کے حوالے سے خاموشی اختیار کرلی ہے اس دوران اسلام آباد ہائیکورٹ سے بھی حکم امتناعی جاری ہوچکا ہے مزید برآں ڈپٹی کمشنر کے احکامات کو نظر انداز کرتے ہوئے ایک ماہ تک کوئی ایکشن نہ لیا گیا تھا واضع رہے کہ سابق تحصیلدار امتیاز جنجوعہ جو کہ کء برس تک تحصیلدار رہے ہے اور وزیر داخلہ کی ہدایت پر ہٹائے جانے کے باوجود انکا پٹواریوں کی تقرر تبادلے میں اثر رسوخ قائم ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -