فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ اسلام آباد کے ابتدائی سمسٹر میں 11 سٹارٹ اپ گریجویٹس کی کامیابی

فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ اسلام آباد کے ابتدائی سمسٹر میں 11 سٹارٹ اپ گریجویٹس کی ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ اسلام آباد کے ابتدائی سمسٹر میں ٹیلی نار کے سپانسرکردہ 13انٹر پرینیورزنے11 سٹارٹ اپس کا آغاز کیا ہے جس میں چندسپیشلائزڈ ایریاز اور ایک فنانشل کامپوننٹ میں تربیت بھی شامل ہیں۔ گریجویٹ کرنے والے فاؤنڈرز کو 128اہل درخواست دہندگان میں سے منتخب کیا گیا ہے جنہوں نے ٹیک سٹارٹ اپ تخلیق کئے ہیں۔یہ سٹارٹ اپس معاشی اورسماجی مسائل کو حل کرتے ہوئے مارکیٹ کی مسخ شدہ حالت کو بہتر کرنے اور ملازمت کے مواقع کیلئے کار گر ثابت ہوں گے۔ فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ اسلام آباد نے پاکستان میں اپنا سب سے پہلے سمسٹر کا آغاز گذشتہ سال کراچی سے کیا اور نومبر 2015میں کراچی میں پہلے سمسٹر کا افتتاح ہوا۔ سمسٹر میں 567امیدواروں نے ایکسپلوریٹری سیمینار ز میں حصہ لیا اور اس کا حصہ بننے کیلئے128فاؤنڈرز نے پروپرائیٹری پریڈکٹو اسسمنٹ ٹیسٹ دیا ۔ نتیجتاً 28امیدواروں کا اندراج کر لیا گیا 13فاؤنڈ رز نے اپنا سمسٹر کامیابی سے مکمل کر کے گریجویٹ کیا ۔ 4ماہ کے جامع تربیتی پروگرا م پر مشتمل کور س سٹارٹ اپس کیلئے تمام پہلوؤں کا احاطہ کرتا ہے جو بچنے ، مقابلہ کرنے اور آگے بڑھنے کیلئے ضروری ہوتے ہیں۔ عالمی سطح پر دنیا بھر کے 100شہروں میں F1چیپٹرمیں اندراج یافتہ فاؤنڈرز کلاس کا کا گریجویشن ریٹ 10%سے30%کے درمیان ہو تاہے ۔گریجویٹس کی کامیابی کے امکانات بہت زیادہ ہوتے ہیں، جس میں آدھے فنڈنگ حاصل کر پاتے ہیں جو مجموعی طور پر 15ارب ڈالر سے زیادہ ہوتی ہے۔ گریجویٹ ہونے والے فاؤنڈرز مختلف شعبہ جات میں مسائل اور مواقع پر روشنی ڈالیں گے۔ 19سالہ ملک ارزش حسین دنیا بھر کے 1500امیدواروں میں سب سے کم عمر FIگریجویٹ ہونے پر شاپنگ کے شعبے میں انقلاب پربا کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور وہ justprice.pkکے ذریعے بہترین قیمتوں کورائج کرنا چاہتے ہیں۔ سیحا وارث پاکستان کی پہلی خاتون FIگریجویٹ کام کرنے والی خواتین کیلئے پریشان ماحول سے آزاد Rise Momکے نام سے آن لائن ڈے کیئر مانیٹرنگ سسٹم رائج کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں اسی طرح محمد عرفان Touch'dکے ذریعے فون، ایس ایم ایس اور سوشل میڈیا کے تعلقات پر اثرات کا جائزہ لے گا ۔ تمام 13گریجویٹس کو فاؤنڈرز انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے سرٹیفکیٹ دیئے گئے۔سیحا وارث کو Rise Momکیلئے ٹاپ فاؤنڈر قرار دیا گیا اور انہیں ٹیلی نار کی جانب سے 25,000/-روپے بطور انعام دیئے گئے ۔گریجویٹ ہونے والے سٹوڈنٹس سے خطاب کرتے ہوئے ٹیلی نار پاکستان کے سی ای او مائیکل فالی کا کہنا تھاکہ ہم پاکستان کو سماجی اختراع کے ذریعے مضبوط بنانے کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔ میرے لیے یہ امر باعث فخر ہے کہ ہماری کوششیں رنگ لا رہی ہیں، اور پاکستان کے نوجوان اپنی کوششوں اور صلاحیتوں سے پاکستان کو رہنے کیلئے پر مسرت مقام بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ڈیجیٹل کا اضافہ ہمارے بنیادی مقاصد میں سے ہے۔ ہم پاکستان میں ہر سطح پر ڈیجیٹل اختراع کے اجرا ء کیلئے معاونت فراہم کریں گے‘‘اس موقع پر فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر اور ڈی ایم وینچر کے سی ای اویوسف حسین کا کہنا تھا کہ سمسٹر کے دوران اور چیلنج کے معاملے میں ہونہار ،پر عزم اور پرجوش نوجوانوں کو آگے بڑھتا دیکھ کرخوشی ہوئی کہ ابتدا ء میں ایسی کامیابی کا سوچا بھی نہیں تھا۔ نامور انجینئرنگ یونیورسٹیوں ،ٹیلی کام ہیڈ کوارٹرز اور پبلک سیکٹر اداروں کے ساتھ ساتھ فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ اسلام آباد سٹارٹ اپس کو منفرد مواقع فراہم کرتاہے جو کاروبار ی مسائل کے حل اور آگے بڑھنے کیلئے ضروری ہوتاہے۔فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر سید احمد مسعود نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا’’جو ہمیں جانتے ہیں وہ یہ بھی جانتے ہیں فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ سے گریجویٹ ہونا ہر لحاظ سے ایک کٹھن کام ہے۔ میں پروگرام مکمل کرنے والے ان تمام 13فاؤنڈرز کو مبارکباد پیش کرتاہوں کہ انہوں نے ڈیجیٹل سولوشن کے ذریعے زندگیوں کو آسان بنانے کیلئے منفرد طریقہ کار پیش کرکے ہمارا سر فخر سے بلند کیا۔میں ٹیلی نار پاکستان کا بھی شکریہ ادا کرنا چاہوں گاجنہوں نے نوجوان ذہنوں کو تربیت دینے کیلئے معاونت فراہم کی اور ان کے خوابوں کو حقیقت کا روپ دیا‘‘چیئر مین پی ٹی اے اسماعیل شا ہ اور سی ای او آئی سی ٹی آ ر اینڈ ڈی فنڈ نے زور دیا کہ پی ٹی اے میں سٹیک ہولڈرز ڈائیلاگ کی حوصلہ افزائی کرنے کے ساتھ آئی سی ٹی آر اینڈ ڈی فنڈ فنڈنگ کے طریقہ کار میں تبدیلی لا رہی ہے تاکہ انٹر پرینیورز کیلئے فنڈنگ کا حصول آسان تر ہو سکے۔ نیشنل ٹیکسٹائل یونیورسٹی کے ریکٹر اور ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر ارشد علی نے تعلیم کے حوالے سے انٹر پرینیورشپ کی اہمیت پر زور اور بہتر صنعت و تعلیم کے فروغ کیلئے تعلقات کی اہمیت پر زور دیا۔ ٹیلی نار پاکستان کے ڈپٹی سی ای او عرفان وہاب خان نے کہا کہ ’’ٹیلی نار پاکستان اور فاؤنڈر انسٹی ٹیوٹ ڈیجیٹل انقلاب ، سماجی اختراع اور سماجی کی مضبوطی کے حوالے سے ایک مقصد رکھتے ہیں جو پاکستان کے نوجوانوں کو ایک راستے پر ڈال کر حاصل کیا جاسکتاہے ۔ میں گریجویٹ کرنے والے تمام طلبا ء و طالبات کو نہ صرف پروگرام کی تکمیل پر مبارکباد پیش کرتاہوں ، بلکہ ان تمام آئیڈیاز کیلئے بھی جو یقیناًپاکستانیوں کی زندگیوں میں تبدیلی لا سکتے ہیں۔‘‘

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -