بریت کی درخواست خارج، قتل کے مجرم کو آج سنٹرل جیل میں پھانسی دی جائیگی

بریت کی درخواست خارج، قتل کے مجرم کو آج سنٹرل جیل میں پھانسی دی جائیگی

  

ملتان(کرائم رپورٹر228خبرنگار خصوصی) سنٹرل جیل ملتان میں قتل کے مجرم کو آج (بقیہ نمبر24صفحہ12پر )

پھانسی دی جائیگی ۔مجرم الطاف نے21سال قبل تھانہ نیو ملتان کے علاقہ میں فائرنگ کر کے محمد شریف کو قتل کردیا تھا۔جس کی رحم کی اپیلیں بھی مسترد ہوگئی ہیں۔جبکہ سنٹر ل جیل انتظامیہ نے مجرم کی ورثا سے اخر ی ملاقات بھی کرادی ہے۔سیشن جج ملتان نے 21 سال قبل بہن بھائی کے دہرے قتل میں سزائے موت پانے والے آج پھانسی پانے والے مجرم کی صلح نہ ہونے پر بریت کی درخواست خارج کر دی ہیفاضل عدالت میں مجرم الطا ف احمد نے درخواست دائر کی تھی کہ 4 دسمبر 1995 ء کو محمد بخش نے تھانہ نیو ملتان میں مقدمہ درج کرایا کہ مجرم الطاف احمد کا بھائی محمد نواز قتل ہو گیا جس پر اس کے بیٹے محمد شریف سمیت دیگر کو ملوث کیا گیا تاہم راضی نامہ ہونے پر مقدمہ ختم ہو گیا لیکن مجرم الطاف احمد نے اپنے دل میں رنجش رکھی اور ساتھیوں سمیت اس کے گھر میں داخل ہوکر فائرنگ کر دی جس سے اس کا بیٹا محمدشریف اور رشتہ دار مسماۃ بھرانواں موقع پر جاں بحق ہوگئے جبکہ بہو مسماۃ کنیزاں زخمی ہو گئی جس پر مجرم الطاف احمد کو گرفتار ہو نے کے بعد مقدمہ پیش کیا گیا تو ایڈیشنل سیشن جج ملتا ن نے سماعت کے بعد 25 مئی 1998 ء کو مجرم الطاف احمد کو سزائے موت اور دیگر سزاو?ں کا حکم دیابعدازاں مجرم کی اپیل ہائیکورٹ سے 5 مئی 2003ء اور سپریم کورٹ سے 26 اپریل 2011ء کو خارج ہونے کے بعد اب رحم کی اپیل بھی خارج ہوچکی ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -