گھوڑے بھی انسانی چہروں کے تاثرات سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ،برطانوی ماہرین نفسیات

گھوڑے بھی انسانی چہروں کے تاثرات سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ،برطانوی ماہرین ...
گھوڑے بھی انسانی چہروں کے تاثرات سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ،برطانوی ماہرین نفسیات

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)برطانیہ میں ہونے والی ایک انوکھی تحقیق میں انکشاف کیا گیا ہے کہ انسانوں کے علاوہ گھوڑے بھی نہ صرف انسانی چہرے کے تاثرات کوباآساانی پڑھ سکتے ہیں بلکہ خوش اور افسردہ چہروں کے درمیان فرق کو بھی سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ یونیورسٹی کے ماہر نفسیات کی جانب سے کی جانے والی اس تحقیق میں 28 گھوڑوں پر تجربہ کیا گیا جس کے دوران ان گھوڑوں کومختلف افراد کی خوش اور افسردحالت میں لی گئی تصاویر دکھائی گئیںجس کے دوران ماہرین نفسیات نے یہ مشاہدہ کیا کہ جےسے ہی ان گھوڑوں کے سامنے افسردہ چہروں والی تصاویر لائی گئی تو انہوں نے ان تصاویر کو اپنی بائیں آنکھ سے دیکھا جبکہ اس دوران ان جانوروںکے دل کی دھڑکن بھی تیز ہوئی اور ماہرین نفسیات کیمطابق یہ وہ رویہ ہے جو عموما منفی چیزیں دیکھنے سے پیدا ہوتا ہے۔ریسرچ میں مزید کہا گیا ہے کہ سٹڈی سے یہی پتہ چلتا ہے کہ گھوڑوں میں بھی افسردہ انسانی چہروں کو سمجھنے کی صلاحیت موجود ہوتی ہے تاہم جب گھوڑوں نے کسی خوش شخص کا چہرہ دیکھا تو انہوں نے اپنی دائیں آنکھ سے تصویر پر فوکس کیا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ گھوڑے مثبت اثرات کی بجائے منفی اثرات پر زیادہ ری ایکشن دکھاتے ہیں اور یہ شائد اس لئے ہے کہ جانور اپنے ماحول کے اندر خطرات کو بھانپنے کو اہمیت دیتے ہیںجبکہ کتوں سمیت دیگر کئی جانوربھی افسردہ مناظر کو اپنی بائیں آنکھ سے ہی دیکھتے ہیں تاہم گھوڑوں کے اندر یہ خاصیت زیادہ پائی جاتی ہے اور اپنی اسی خوبی کی وجہ سے پہلی بار یہ دیکھنے میں آیا ہے کہ گھوڑے مثبت اور منفی انسانی رویوں میں فرق کو باآسانی محسوس کر سکتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -