وہ بھارتی خاندان جو اس وقت جنوبی افریقہ پر حکمرانی کررہا ہے، ایسا کیسے ممکن ہے؟ ایسی داستان کہ کوئی بھی حیران رہ جائے

وہ بھارتی خاندان جو اس وقت جنوبی افریقہ پر حکمرانی کررہا ہے، ایسا کیسے ممکن ...
وہ بھارتی خاندان جو اس وقت جنوبی افریقہ پر حکمرانی کررہا ہے، ایسا کیسے ممکن ہے؟ ایسی داستان کہ کوئی بھی حیران رہ جائے

  

کیپ ٹاﺅن(مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی افریقہ میں سیاسی سکینڈلز، بڑے معاشی معاہدے اور اربوں ڈالرز شادیوں پر اڑانے کے باعث بھارتی نژاد گپتا فیملی آج کل سخت تنقید کی زد میں آئی ہوئی ہے۔ گپتا فیملی کے افراد1990ءمیں جنوبی افریقہ منتقل ہوئے۔تین بھائیوں اجے، اتل اور راجیش نے کمپیوٹر، کان کنی، میڈیا اور انجینئرنگ کے شعبوں میں کاروبار شروع کیے اور بے مثال کامیابیاں حاصل کیں۔1994ءمیں انہوں نے صحارا کمپیوٹرز کے نام سے پہلی کمپنی کی بنیاد رکھی اور آج وہ جنوبی افریقہ کے چند امیر ترین خاندانوں میں شمار ہوتے ہیں۔انہوں نے 2010ءمیں ایک اخبار، 2013ءمیں اے این این7نیوز چینل قائم کیا جس کے ذریعے انہوں نے جیکب زوما کے خلاف اٹھنے والی اپوزیشن کی تحریک کو ناکام بنا دیا۔آج گپتا خاندان اپنی دولت کے بل پر اتنا اثرورسوخ پا چکے ہیں کہ جنوبی افریقہ کے صدر جیکب زوما ان سے پوچھے بغیر کوئی قدم نہیں اٹھاتے۔ جیکب زوما اور گپتا فیملی کی دوستی اس وقت کھل کر سامنے آئی جب اپوزیشن نے جیکب زوما کی حکومت کے خاتمے کے لیے تحریک چلائی اور گپتا فیملی نے اسے ناکام بنانے میں بنیادی کردار ادا کیا۔ کئی مواقع پر جیکب زوما نے کھل کر گپتا فیملی کے ساتھ اپنی دوستی کا دفاع کیا۔ جیکب زوما کے کئی وزیروں کے بھی گپتا فیملی کے ساتھ قریبی تعلقات ہیں۔اور بالواسطہ طور پر گپتا فیملی جنوبی افریقہ پر حکومت کر رہی ہے۔بھارت کے شہر سہارن پور سے تعلق رکھنے والے گپتا خاندان کی جیکب زوما کے ساتھ دوستی کا آغاز 2009ءمیں ہوا جب وہ جنوبی افریقہ کے صدر بنے۔

مزید جانئے: وہ آدمی جسے لوگ پیسے دے کر خودد کو’غائب‘ کرواتے ہیں، مگر کیوں اور کیسے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

جنوبی افریقہ کی اپوزیشن جماعتیں گپتا فیملی کو سخت تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں۔ای ایف ایف کے لیڈر جولیس ملیما کا کہنا ہے کہ ”ہم صورتحال کو اس نہج تک نہیں جانے دیں گے جہاں جنوبی افریقہ ایک فیملی کی کالونی بن کر رہ جائے۔ “ جولیس نے الزام لگایا کہ جنوبی افریقہ کو آج کل جو مشکلات درپیش ہیں ان میں سے بیشتر کی وجہ گپتا فیملی ہی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ گپتا فیملی ہمارا ملک چھوڑ دے۔ ”انہوں نے کہا کہ ”ہم گپتا فیملی کے ساتھ بھی وہی کریں گے جو ہم نے امریکہ کو اپنی کالونی بنانے والوں کے ساتھ کیا تھا۔ ہم ان پر جتنی زیادہ تنقید کرتے ہیں وہ اتنی ہی زیادہ کرپشن کرنے لگتے ہیں، انہیں جنوبی افریقہ کی کوئی پرواہ نہیں ہے۔ ہم مزید انہیں برداشت نہیں کر سکتے۔ یہ ایک جنگ ہے اور اس بار ہم یہ جنگ گپتا فیملی کے خلاف لڑ رہے ہیں۔“جنوبی افریقہ میں گپتا فیملی کے اثرورسوخ کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ 2013ءمیں ان کی ایک شادی میں شرکت کے لیے جہاز میں مہمان جنوبی افریقہ لائے گئے تھے اور وہ جہاز جنوبی افریقہ کی فضائی فوج کی ایئربیس پر اتارا گیا تھا۔ ان تمام مہمانوں کو امیگریشن چیکنگ کے بغیر جنوبی افریقہ لایا گیا اور ایئربیس سے پولیس کے خصوصی پروٹوکول کے ساتھ 160کلومیٹر دور شادی کی تقریب میں پہنچایا گیا۔ اسی واقعے سے جنوبی افریقی عوام میں گپتا فیملی کے خلاف غم و غصہ پروان چڑھا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -