وفاقی وزیرتجارت نے فیڈرل ٹیکسٹائل بورڈ کا پانچواں اجلاس آج طلب کرلیا

وفاقی وزیرتجارت نے فیڈرل ٹیکسٹائل بورڈ کا پانچواں اجلاس آج طلب کرلیا

کراچی (آن لائن) وفاقی حکومت نے ٹیکسٹائل سیکٹر کی مستقل گرتی ہوئی برآمدات پر قابو پا کر اضافہ کرنے کیلئے سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے موثرحکمت عملی ترتیب دینے کا فیصلہ کیا ہے۔رواں مالی سال کی پہلی ششماہی جولائی تا دسمبر 2016 کے دوران پاکستان سے ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمدات میں بلحاظ حجم اوسطاً 13.58 فیصد اور بلحاظ قدر اوسطا1.57 فیصد کی کمی ہوئی ہے جن میں روئی کی برآمدات میں 49.87 فیصد، یارن 7.17 فیصد، کپڑے5.57 فیصد، ٹاولز 7.79 فیصد، آرٹ سلک 30.34 فیصد اور دیگر ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمدات میں11.98 فیصد کی کمی شامل ہے۔ وفاقی وزیرتجارت نے آج جمعہ کو فیڈرل ٹیکسٹائل بورڈ کا پانچواں اجلاس طلب کیا ہے جس میں برآمدات کے فروغ کیلیے وزیراعظم کے ترغیبی پیکیج، برآمدات میں اضافے کی منصوبہ بندی اورمتعلقہ برآمدی ایسوسی ایشنز کی جانب سے برآمدات میں اضافے کے لیے موصول ہونے والی طویل المیعاد منصوبہ بندی پر مشتمل تجاویز پربحث کی جائیگی۔

اور ویلیوایڈڈٹیکسٹائل ایکسپورٹرز پیکیج پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے بہتری کے لیے سفارشات دیں گے۔ذرائع نے بتایا کہ ریڈی میڈگارمنٹس اور ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر وزیراعظم کے ترغیبی پیکیج سے مطمئن نہیں، ان کا موقف ہے کہ پیکیج سے صرف ٹیکسٹائل انڈسٹری کا بنیادی خام مال تیارکرنے والے اپٹما کے برآمدکنندگان ہی مستفید ہوسکتے ہیں جبکہ ریڈی میڈ گارمنٹس اورویلیوایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر کے تمام برآمدکنندگان کو اس سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔#/s#

مزید : کامرس