حکومت خواتین کو با اختیار بنانے کے حقوق کے تحفظ کیلئے کوشاں ہے:مریم اورنگزیب

حکومت خواتین کو با اختیار بنانے کے حقوق کے تحفظ کیلئے کوشاں ہے:مریم اورنگزیب

اسلام آباد(آن لائن)وزیرمملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ حکومت خواتین کو بااختیار بنانے اور ان کے حقوق کے تحفظ کیلئے کوشاں ہے ، پاکستان میں دنیا کے مقابلے میں بہتر قانون سازی ہورہی ہے،ملک میں انتخابی اصلاحات کے ذریعے بھی خواتین کے حقوق کا تحفظ کیا گیا ، حلقے میں خواتین کے دس فیصد سے کم ووٹ کاسٹ ہونے پر نتائج کالعدم قرار پائیں گے ۔تحفظ خواتین کے بارے میں قومی مشاورتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر مملکت نے کہا کہ پارلیمنٹ میں بننے والے قوانین کا براہ راست اثر معاشرے پر ہوتا ہے اور خواتین کو تعلیم دے کر بااختیار بنایا جاسکتا ہے جبکہ بچوں کی تعلیم بہترین سرمایہ کاری ہے ۔انہوں نے کہاکہ تعلیمی نصاب جدید تقاضوں پر ہم آہنگ کرکے شعور اجاگر کیا جاسکتا ہے اور ابتدائی تعلیمی نصاب کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے اس سے ہی بچے کی شخصیات اجاگر کر نے میں معاون ثابت ہوتی ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت تعلیمی اصلاحاتی پروگرام پر عمل پیرا ہے اور تعلیم کے فروغ کے لئے انٹرنیٹ اور دوسرے جدید ذرائع استعمال کررہی ہے ، ہم نے اداروں میں کمیٹیاں بنا دی ہیں تاہم اس میں قانون کی ادائیگی کی ضرورت ہے ۔وزیر مملکت نے کہا کہ ملک میں انتخابی اصلاحات کے ذریعے بھی خواتین کے حقوق کا تحفظ کیا گیا ہے اور ملازمت کرنیوالی خواتین کو ہراساں کر نے کا معاملے حساس نوعیت کا ہے اور پارلیمنٹ خواتین کے حقوق سے متعلق بہتر ادراک رکھتی ہے ، پاکستان میں دنیا کے مقابلے میں بہتر قانون سازی ہورہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ آئین پاکستان خواتین کو یکساں اور بنیادی حقوق فراہم کرتا ہے اسی لئے حلقے میں خواتین کے دس فیصد سے کم ووٹ کاسٹ ہونے پر نتائج کالعدم قرار پائیں گے ۔انہوں نے کہاکہ خاتون اراکین پارلیمنٹ عورتوں کے حقوق کے لئے بہترین کام کررہی ہیں اور ہم نے خواتین کے بنیادی حقوق سے متعلق قوانین پر عملدرآمد کو یقینی بنایا ہے ۔وزیر مملکت نے مزید کہا کہ معاشرے میں خواتین کے بنیادی حقوق سے متعلق شعور اور آگاہی ضروری ہے اور ہم نے اسی لئے اسلام آباد میں طالبات کے لئے الگ ٹرانسپورٹ کا انتظام کیا اور مردوں کو بھی چاہیے کہ وہ خواتین کے حقوق سے متعلق اپنا مؤثر کردارادا کریں۔

مزید : علاقائی