جنوبی افریقہ، ہنگاموں پر قابو پانے کیلئے 440سے زائد فوجی اہلکار تعینات

جنوبی افریقہ، ہنگاموں پر قابو پانے کیلئے 440سے زائد فوجی اہلکار تعینات

جوہانسبرگ(بیورورپورٹ)جنوبی افریقہ کے صدر جیکب زوما نے قوم سے اپنے سالانہ خطاب کیموقع پر ممکنہ جھڑپوں سے بچاؤ کے لئے پارلیمنٹ کے باہر 440 سے زائدفوجی اہلکار تعینات کر دیئے ہیں۔ زوما کو کرپشن سکینڈل ،بے روزگاری کی بگڑتی صورتحال اور اقتصادی ترقی کے عمل میں سست روی کے باعث گزشتہ خطاب کے بعد سے تنقید کا سامنا ہے ۔ انکے گزشتہ خطاب پر بھی مظاہرین نے کافی ہنگامہ آرائی کی تھی ۔ دسمبر میں 4 وزراء نے صدر کو اقتدار سے نکالنے کی کوشش کی، جس کے باعث حکمران افریقن نیشنل کانگریس کومقامی انتخابات میں بدترین نتائج کا سامنا کرنا پڑا۔فرانسیسی نیوز ایجنسی کے مطابق صدر کا کہنا ہے کہ کیپ ٹاؤن میں "امن و امان" کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لئے پارلیمنٹ کے باہر فوج تعینات کی گئی ہے لیکن اس قدم کی حزب جماعت مخالف ڈیموکریٹک الائنس پارٹی نے شدید مخالفت کی ہے۔ان کے بیان کے مطابق " ڈیموکریٹک الائنس (ڈی اے) افریقن نیشنل کانگریس کے اندر اور باہرپارلیمنٹ کے لوگوں کوسیکیورٹی ریاست شو میں تبدیل نہیں ہونے دے گی ۔اکنامک فریڈم فائٹر (ای ایف ایف) کے قانون سازوں کے مطابق فوج کا استعمال "شہریوں پر جنگ " مسلط کرنے کے مترادف ہے ۔

مزید : عالمی منظر