روزنامہ پاکستان نئے دور میں داخل ،آن لائن ایڈیشن نے مقبولیت کے ریکارڈ توڑ دیئے

روزنامہ پاکستان نئے دور میں داخل ،آن لائن ایڈیشن نے مقبولیت کے ریکارڈ توڑ ...

لاہور(رپورٹنگ ٹیم )چیف ایڈیٹر روزنامہ پاکستان مجیب الرحمن شامی نے کہا ہے کہ روزنامہ پاکستان ایک نئے دور میں داخل ہو گیا ہے ،ہماری اصل طاقت بیورو چیف اور علاقائی نمائندگان ہیں ۔اخبار کا ویب ایڈیشن ملک بھر میں سب سے معروف اور پڑھی جانے والی ویب سائٹ بن چکی ہے جس کے روزانہ سے 11سے 20لاکھ تک وزیٹرز ہیں جو کہ جملہ سٹاف کی محنت کا منہ بولتا ثبوت ہے جبکہ انگلش اور چائنیز ایڈیشن بھی ویب پر آ چکا ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے روزنامہ پاکستان کے ہیڈ آفس میں منعقدہ بیورو زکانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر روزنامہ پاکستان کے ایڈیٹر عمر مجیب شامی ،ایگزیکٹو ایڈیٹر عثمان شامی ،ڈائریکٹر مارکیٹنگ عتیق الزمان بٹ ،ڈائریکٹر علی شامی ،گروپ ایڈیٹر کو آر ڈی نیشن ایثار رانا،جوائنٹ ایڈیٹر نعیم مصطفی ،ڈائریکٹر فنانس ارشد محمود ،چیف نیوز ایڈیٹر عباس علی تبسم،سرکولیشن مینجر منظور ملک ،ایڈمنسٹریٹر جمیل قیصرسمیت پنجاب بھر سے آئے بیورو چیفس موجود تھے۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیف ایڈیٹر روزنامہ پاکستان مجیب الرحمن شامی نے کہا کہ انہوں نے جب روزنامہ پاکستان کو سنبھالا تو ادارہ کے حالات مخدوش تھے اور قرضوں کا بوجھ ادارے پر موجود تھا۔ساتھ ہی جنرل (ر) پرویز مشرف کا مارشل لاء لگ گیا جس کی وجہ سے مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا لیکن بیورو چیفس اور ہیڈ آفس میں موجود ساتھیوں نے دن رات محنت کر کے ادارے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کر دیا ہے اور اب ادارہ ایک نئے دور میں داخل ہو چکا ہے ۔ادارہ کی اصل ظاقت بیورو چیفس ہیں جنہوں نے پنجاب کے دیگر شہروں میں نہایت منظم انداز میں اخبار کو ترقی کے مراحل سے گزارتے ہوئے ملک کے ممتاز ترین اداروں کی صف میں شامل کر دیا ہے۔بیورو آفسز کو چاہیے کہ وہ اپنے شہروں میں ہونے والے واقعات کی بھرپور کوریج کر یں تاکہ ان کی کارکردگی مزید بہتر ہو سکے ۔انہوں نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ ادارہ کو مزید وسعت دیتے ہوئے نئے بیورو ز کھولتے ہوئے اس کو مزید مضبوط کیا جائے۔ملک میں اخبارات کو اشاعت میں اضافہ کرنے کے لئے بے پناہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ،لاہور جیسے بڑے شہر میں صرف ایک اخبار مارکیٹ ہے جب تک اخبار لوگوں تک پہنچتا ہے تب تک اس کو ہزاروں افراد انٹر نیٹ پر پڑھ چکے ہوتے ہیں ۔دوسری جانب بھارت میں صورتحال مختلف ہے جہاں اخبارات کی قیمتیں اب بھی 3سے 4روپے ہیں اور ان کی اشاعت میں ٹی وی چینلز اور ویب چینلز کے آنے کے باوجود بتدریج اضافہ ہو رہا ہے ۔۔اس موقع پر روزنامہ پاکستان کے ایڈیٹر عمر مجیب شامی نے کہا کہ اخبارات کو سوشل والیکٹرانک میڈیا کے مقابلے میں لانے اور ان سے بہتر بنانے کے لئے لوکل خبروں کو بہتر انداز میں پیش کرنا لازمی ہے۔قومی سطح کی خبریں عوام تک با آسانی الیکٹرانک میڈیا کے ذریعہ پہنچ جاتی ہیں لیکن نواحی علاقوں اور شہروں کی خبریں صرف اخبارات ہی فراہم کر سکتے ہیں ۔بیو رو چیفس کو چاہیے کہ وہ اپنے علاقوں میں ہونے والے واقعات کی کوریج کو بڑھائیں ۔انہوں نے کہا کہ روزنامہ پاکستان کے ویب ایڈیشن کو روزانہ 11لاکھ افراد پڑھتے ہیں جو کہ ادارہ کے ایک اعزاز کی بات ہے۔ایگزیکٹو ایڈیٹر عثمان شامی نے کہا کہ بیورو چیفس کو چاہیے کہ وہ اپنے علاقوں میں ہونے والی دلچسپ اور عوامی مفاد کی خبروں کو روزانہ کی بنیاد پر تلاش کریں تاکہ لوگوں کو خبر کے ساتھ ساتھ علمی و ثقافتی آگاہی بھی مل سکے۔اسی طرح سے کسی بھی واقعہ کے رونما ہوتے وقت اگر رپورٹر وہاں موجود ہے تو وہ ویب پر اس کو لائیو بھی چلا سکتا ہے اس طرح سے رپورٹنگ کا معیار بہتر ہو گا۔گروپ ایڈیٹرکو آر ڈی نیشن ایثار رانانے اپنے خطاب میں کہا کہ میں پچھلے 27سالوں میں صحافت میں ہوں ،میں نے ان 27سالوں میں وہ کچھ نہیں سیکھا ،جو میں نے جناب مجیب الرحمٰن شامی سے سیکھاوہ پیار اور محبت کا مجسمہ ہیں ،اور ان کی ہر بات سننے والے کے دل پر اثر کرتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیوزروم ،رپورٹرز اور بیوروکا چولی دامن کو ساتھ ہے ،آپ کی کئی غلطیاں نیوز روم بر داشت کرتا ہے ،اور آپ بھی ان کی کئی غلطیوں کو برداشت کریں ۔دوسری جانب نیوز ایڈیٹرز کو بڑے دل کا ہونا چاہیے اور وسیع القلبی کا مظاہرہ کرنا چاہیے ،انہوں نے بیوروکو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ علاقے کے مسائل کو بھی کوریج دیں تاکہ عوامی مسائل حل کئے جا سکیں۔سیالکوٹ کے بیوروچیف ابریز خان نے کہا کہ روزنامہ پاکستان کے لئے پہلے سے بڑھ کر اپنی توانائیاں صرف کریں گے ۔ بیو رو چیف گجرات مرزا نعیم الرحمن نے کہا کہ گجرات میں اخبار کو مقامی اور ڈویژن کی سطح پر متعارف کروایا ہے اور ہم چیف ایدیٹر مجیب الرحمان شامی کی زیر قیادت روزنامہ پاکستان کو گجرات کا نمبر ون اخبار بنائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ ہم روزنامہ پاکستان کو ماں کا درجہ دیتے ہیں اور اس کی ترقی کے لئے ہم دن رات ایک کر دیں گے ۔روزنامہ پاکستان مقامی سطح پر چھپنے والے اخباروں کا مقابلہ بھی کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضلعی اور ڈسٹرکٹ سطح کے نمائندوں کو تربیت کی ضرورت ہے ۔ آن لائن نیوز پیپر کے حولے سے عثمان شامی بہت اچھا کام کر رہے ہیں۔شیخوپورہ سے روزنامہ پاکستان کے بیورو چیف شیخ ارشد نے کہا کہ شیخوپورہ ایڈیشن کے اجراء کے بعد شیخوپورہ میں روزنامہ پاکستان کی سرکولیشن میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے ۔اس کے علاوہ شیخوپورہ کے سیاسی ،مذہبی اور دوسرے مکتبہ فکر کے افراد کی مناسب کوریج ایک حوصلہ فزا اقدام ہے ۔ بھلوال کے نمائندہ ملک اقبال نے تجاویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی اخبار کی سرکولیشن کو بڑھانے کے لئے ہاکروں اور نیوز ایجنٹس کو پابند بنانا لازم ہے ۔سرگودھا کے بیوروچیف سجاد اکرم نے کہا کہ سرگودھا میں اخبار 16مقامی پیپرز کا مقابلہ کر رہا ہے اور گروپ ایڈیٹر کوارڈینیشن ایثار رانا کی خصوصی کاوشوں سے اخبار میں بھلوال شہر کی مقامی خبروں کی مناسب کوریج اورمجموعی طور پر اخبار کی لے آؤٹ میں خوبصورت تبدیلیوں کی وجہ سے سرگودھا میں روزنامہ پاکستان کے قارئین میں اضافہ ہوا ہے ۔گوجرانوالہ کے بیورو چیف اسلم مغل نے کہاکہ گوجرانوالہ میں ہاکروں کو روزنامہ پاکستان کی سرکولیشن میں اضافہ کرنے پر نقد انعامات سے نوازا گیا ہے کیونکہ کسی بھی اخبار کو اعلی مقام دلوانے کے لئے ہاکر ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں ۔ فیصل آباد ،قصور ، اوکاڑہ اور بہاولنگر کے بیورو چیف صاحبان منیر عمران ،شیخ محمد حسین، ذوالفقار اٹھوال اور عامر زمان؂ نے اخبار کی بہتری اور خبروں کی مناسب اشاعت کے حوالے سے تجاویز دیں اور کہا کہ روزنامہ پاکستان کے مندرجات دیگر تمام اخبارات کے مقابلے میں کہیں بہتر ہیں ۔

مزید : صفحہ اول