ماربل کی صنعت سے بے روز گاری میں کمی آئی ،ڈپٹی کمشنر بونیر

ماربل کی صنعت سے بے روز گاری میں کمی آئی ،ڈپٹی کمشنر بونیر

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)ڈپٹی کمشنر بونیر ظریف المعانی نے کہا کہ ماربل کی صنعت سے بونیر کے ہزاروں افرادکا روزگار وابستہ ہے ۔ہم اس صنعت کو مزید ترقی دینے کے لئے بھر پور اقدامات اٹھارہے ہیں ۔مگر اوورلوڈنگ کی وجہ سے بونیر کے سڑکوں کو تباہی سے بچانے کے لئے بھی اقدامات ضروری ہے ۔اور ساتھ ساتھ ٹرکوں پر لوڈ خام ماربل جس سے عوام کی زندگیوں کو شدید خطرات کا سامنا ہے اس کو بھی قانون کے دائرے میں لایا جارہاہے ۔اس صنعت کو ترقی دینے کے لئے ضروری ہے کہ بونیر میں ماربل انڈسٹری کا قیام عمل میں لایا جائے ۔اگر ائندہ کے لئے کسی بھی ٹرک سے ایک فٹ سے زیادہ ماربل پتھر نکلاہوادیکھا گیا تو مائین اونرز سمیت ٹرک ڈرائیور کے خلااف ایف ائی آر درج کی جائے گی۔اس سلسلے میں ایک اہم اجلاس ڈی سی بونیر کے دفتر میں منعقد ہوا جس میں ماربل فیکٹری ایسوی ایشن کے صدر مراد خان ،ارشد اقبال ،انجنئر امان خان ۔ٹرکس او نرز ایسوسی ایشن کے صدر عبدلستار بونیر وال ،جنرل سیکرٹری فرین خان ،اے سی گاگرہ عظمت وزیر ،اے اسے سی ڈگر زاہد عثمان کاکاخیل ۔اے ڈی مائینز اور پی کے ایچ اے کے نمائندہ نے شرکت کی ۔اس موقع پر عبدلستار بونیر وال نے کہا کہ ماربل بونیر کا واحد صنعت ہے جس سے ہزاروں افراد کا روزگاروابستہ ہے ۔ٹرکس او نرز ایسوسی ایشن نے ہر موقع پر ضلعی انتظامیہ کے ساتھ بھر پور تعاون کیاہے ۔اس موقع پر ضلع ناظم اور ضلع نائب ناظم بھی موجود تھے ۔ڈی سی بونیر نے کہا کہ ماربل کے لوڈ ٹرکوں کی وجہ سے بونیر کے سڑکیں خراب ہورہی ہے اور ساتھ ساتھ ٹرکس سے باہر نکلے ماربل کے پتھر عوام کی جانوں کے لئے خطرہ ہے جو کسی وقت بھی ٹرکس سے گر کر کسی کی بھی جان لے سکتی ہے ۔انہوں نے ہدایت کی کہ ٹرکس ماولکان ایک فٹ سے زیادہ پتھر باہر نہ نکالے اور ایک پتھر کے اوپر دوسرا پتھر نہ رکھے ایسا کرنے والوں کے خلاف سحت قانونی کاروائی کی جائے گی اور اسکے خلااف ایف ائی ار درج کی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کا دیرپا حل یہ ہے کہ بونیر زیادہ مقدار میں ماربل پید اکرنے والا ضلع ہے یہاں پر ماربل انڈسٹری وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ٹرکس مالکان چھوٹے ٹرک میں 37 ٹن وزن اور بڑے ٹرک میں 55 ٹن کے سوا لوڈ نہیں کرے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر