ٹیچنگ ہسپتال ڈیرہ غازیخان کے مزید 350 بستر کے حامل وارڈز کی تعمیر کی منظوری

ٹیچنگ ہسپتال ڈیرہ غازیخان کے مزید 350 بستر کے حامل وارڈز کی تعمیر کی منظوری

ڈیرہ غازیخان(نمائندہ خصوصی )ٹیچنگ ہسپتال ڈیرہ غازیخان کے مزید 350بستر کے حامل وارڈز کی تعمیر کے ترمیمی منصوبہ کی منظوری دے دی گئی ہے او رحکومت پنجاب کی طرف سے مطلوبہ فنڈز ایک ارب 62کروڑ روپے فراہم کر دیئے گئے ہیں . عمارتوں کو منسلک کرنے کیلئے فلائی (بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

اوور ؍ پل تعمیر کیے جائیں گے . 40کروڑ روپے کی لاگت سے سنٹرلی ایئرکنڈیشنڈ نظام نصب کیا جائے گا . تعمیراتی کام جون 2017تک مکمل کرنے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں . علاوہ ازیں ایمرجنسی وارڈ کی بھی100 بستر تک توسیع کیلئے سفارشات تیار کر لی گئی ہیں . یہ بات کمشنر ڈیرہ غازیخان محمد یثرب کو ہسپتال کے معائنہ کے دوران بریفنگ میں بتائی گئی . کمشنر نے کہاکہ مطلوبہ فنڈز فراہم کر دیئے گئے ہیں اس لیے ٹھیکیدار افرادی قوت بڑھا کر کام کی رفتار کو تیزتر کریں . جون تک مسنگ سپیشلٹیز کے تحت 350بستر کے حامل وارڈز کو فنکشنل کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی. انہوں نے کہاکہ ٹیچنگ ہسپتال ڈیرہ غازیخان ڈویژن کے اہم ترین منصوبے میں شامل ہے ، مٹیریل کے معیار اور مدت تکمیل پر ہرگز سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا. ہسپتال میں بجلی کی مسلسل فراہمی کیلئے ٹرانسفارمرز اور جنریٹرز کی تنصیب سمیت دیگر کام گرمیوں سے قبل مکمل کر لیاجائے. پارکنگ سمیت اہم مقامات پر متعلقہ شعبوں کی رہنمائی کیلئے سائن بورڈز ، ایم ایس اور دیگر متعلقہ افسران کے رابطہ نمبر آویزاں کیے جائیں . ڈاکٹرز سمیت دیگر تمام سٹاف کی بائیو میٹرک حاضری کو یقینی بنایا جائے سکیورٹی معاملات کی چیکنگ اور کنٹرول روم کی نگرانی کیلئے سینئر ڈاکٹر کو فوکل پرسن مقرر کیا جائے. قبل ازیں کمشنر محمد یثرب نے گائنی وارڈ کا اچانک معائنہ کیا. مختلف وارڈز میں زیر علاج خواتین سے دریافت کرنے پر باہر سے ادویات خریدنے کی شکایات کیں جس پر کمشنر نے ایم ایس کو فوری طو رپر کارروائی کرنے کی ہدایات جاری کیں. کمشنر نے کہاکہ گائنی ایمرجنسی وارڈز اور ٹراماسنٹر سمیت ہسپتال میں زیر علاج افراد کو باہر کی ادویات اور ٹیسٹ تجویز کرنے والوں کے خلاف کارروائی کر کے رپورٹ پیش کی جائے. کمشنر محمد یثرب نے کہاکہ ٹیچنگ ہسپتال کے لانز ، پارکنگ اور صفائی کے معاملات میں بہتری آئی ہے تاہم اب بھی کام کرنے کی ضرورت ہے . گراسی پلاٹس سمیت مختلف مقامات پر بنچز نصب کی جائیں. ایم ایس ٹیچنگ ہسپتال ڈاکٹر عتیق الرحمن اور دیگر نے کمشنر محمد یثرب کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ ٹیچنگ ہسپتال میں 325بستر کے حامل شعبے فنکشنل ہیں ہسپتال کو مرحلہ وار 850بستر تک توسیع دی جائے گی جس میں ایمرجنسی وارڈ کے100 بستر کی توسیع کا مجوزہ منصوبہ بھی شامل ہے . سکیورٹی انتظامات کو مزید بہتر کرنے کیلئے خفیہ کیمروں کی تعداد 23سے بڑھا کر 81کر دی جائے گی. علاوہ ازیں 80لاکھ روپے کی مالیت سے ایمرجنسی وارڈ سمیت ہسپتال کے مختلف شعبوں میں مرمت کا کام جاری ہے . سکیورٹی اہلکاروں کی پولیس کے ذریعے تربیت اور کوائف کی جانچ پڑتال کرائی جائے گی. ٹیچنگ ہسپتال میں میڈیکل ریپ کا داخلہ بند کر دیاگیاہے. اس موقع پر ایڈیشنل کمشنر کوآرڈینیشن اظفر ضیاء، ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ؍ سی ای او ڈاکٹر منور عباس ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر فنانس و پلاننگ سرفراز مگسی ، ایم ایس ڈاکٹر عتیق الرحمن ، ڈپٹی ایم ایس ڈاکٹر خالد تحسین ، ڈاکٹر حامد حیات ، ایس ڈی او بلڈنگز سمیت دیگر متعلقہ افسران ہمراہ تھے .

مزید : ملتان صفحہ آخر