جامعہ زکریا لاہور کیمپس سکینڈل، بڑے کرداروں کی گرفتاری کی تیاریاں

جامعہ زکریا لاہور کیمپس سکینڈل، بڑے کرداروں کی گرفتاری کی تیاریاں

ملتان ( نمائندہ خصوصی ) لاہور ہائی کورٹ لاہور کے احکامات کی روشنی میں نیب ملتان بیورو نے بی زیڈیو کے لاہور کیمپس سکینڈل میں برف کرداروں کو حراست میں لینے کی تیاریاں شروع کردیں ہیں ڈی جی نیب ملتان بیورو نے شعبہ پراسیکیویش کو سابق رجسٹرار بی زیڈیو ملک منیر حسین ، چیئرمین ویسٹ کانٹینل گروپ محمد طاہر اقبال ، منیجنگ ڈائریکٹر منیر احمد بھٹی ، پارٹنر عبدالعلیم بھٹی سابق سربراہ ویسٹ کانٹینل گروپ محمد عقیلی طفیلی ، محمد گلستان ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب کی سدرہ شفیع اور مشکوک اکاؤنٹس ہولڈر سدرہ شفیع کی ضمانتیں خارج کروانے کی ہدایات جاری کردیں ہیں اس سکینڈل میں سابق وی سی بی زیڈیو ڈاکٹر سید خواجہ علقمہ اور حمزہ منیر بھٹی کو پہلے حراست میں لیا گیا بعدازاں ضمانت بعد از گرفتاری منظور ہونے کے بعد رہا کردیا معلوم ہوا ہے نیب ہیڈ آفس کی جانب سے اس ریفرنس میں ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کی خاتون آفیسر سدرہ شفیع کا نام ڈراپ کرنے پر زور دیا گیا ۔ ہیڈ آفس کی جانب سے طویل عرصہ تک یہ فائل دبانے کی کوشش کی گئی ۔ لیکن یہ ممکن نہ ہوسکا آخر کار نیب ملتان بیورو کی جانب سے اس سکینڈل کا ضمی ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کیا گیا لیکن مرکزی ملزمان میں سب سے صرف2ملزمان کو حراست میں لیا گیا باقی کروڑوں روپے کی خورد برد میں ملوث دیگر 9ملزمان کی گرفتاری میں یا تو رحم دلی کا مظاہرہ کیا گیا یا پھر فہم دلی کا ظاہر کی گئی نیب ریفرنس کی تیاری کے دوران ہزاروں طلبہ کی تعلیمی مستقبل مخدوش ہونے لگا تو انھوں نے عدالت عالیہ لاہور بنچ سے رجوع کیا ۔ اس موقع پر چیئرمین نیب پاکستان ڈائریکٹر جنرل نیب ملتان بیورو اور انوسٹی گیشن آفسران بھی موجود تھے معلوم ہوا ہے اس ریفرنس کی نامزد خاتون ملزمہ جویریہ رسول کے بینک اکاؤٹنس سب 5,5کروڑ روپے مالیت کی مشکوک ٹرائزیکشن نکلی ۔ معلوم ہوا ہے کہ اس ریفرنس مسلم لیگ ن کے پی پی 154لاہور سے ایم پی اے سید زعیم حسین قادری کو بھی فائنل ریفرنس میں نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ زعیم قادری صوبائی حکومت میں ایک اہم عہدے پر فائز رہے ہیں اور بے زیڈیو کے لاہور کیمپس سکینڈل کے مرکزی کردار میں سے ایک ہیں ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر