ٹرمپ کو ایک اور دھچکا،کورٹ کی طرف سے سفری ویزہ پابندی کی معطلی برقرار

ٹرمپ کو ایک اور دھچکا،کورٹ کی طرف سے سفری ویزہ پابندی کی معطلی برقرار
ٹرمپ کو ایک اور دھچکا،کورٹ کی طرف سے سفری ویزہ پابندی کی معطلی برقرار

  


واشنگٹن (صباح نیوز) امریکی اپیلٹ کورٹ نے سات مسلم ممالک کے شہریوں پر سفری پابندیاں برقرار رکھنے کی حکومتی اپیل کو مسترد کر دیا۔ شام، لیبیا، یمن، سوڈان، ایران، عراق اور صومالیہ کے شہریوں کو امریکہ آنے کی اجازت ایک مرتبہ پھر مل گئی ہے جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ فیصلہ کے خلاف اعلیٰ عدلیہ میں اپیل دائر کی جائے گی۔ کیس کی سماعت سان فرانسسکو کی اپیلٹ کورٹ میں ہوئی۔

عدالت نے سات مسلم ممالک کے شہریوں پر سفری پابندی برقرار رکھنے کی حکومتی درخواست مسترد کر دیا جس کے بعد شام، یمن، سوڈان، ایران، عراق، صومالیہ اور لیبیا کے شہریوں کو امریکہ آنے کی اجازت مل گئی ہے۔ عدالت نے حکومت کے وکیل کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوط کر لیا۔ اپیلٹ کورٹ کے تینوں ججوں نے متفقہ فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ عارضی سفری پابندی بھی ملک کے لئے نقصان دہ ہے۔ محکمہ انصاف کے وکلاءیہ ثابت کرنے میں ناکام رہے ہیں کہ ان سات مسلم ممالک کا کوئی بھی شہری امریکہ میں دہشت گردی میں ملوث رہا ہے۔ اپیلٹ کورٹ کا فیصلہ 29 صفحات پر مشتمل ہے۔ سفری پابندی کا معاملہ اب سپریم کورٹ میں جائے گا جہاں آٹھ رکنی بینچ کیس کی سماعت کرے گا۔ سپریم کورٹ میں فیصلہ ٹائی ہونے کی صورت میں اپیلٹ کورٹ کا فیصلہ برقرار رہے گا۔

TapMad نے ہمہ وقت سرگرم رہنے والوں کے لئے انٹرٹینمنٹ کی نئی دنیا متعارف کروادی،کلک کریں

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے سات مسلم ممالک کے شہریوں کی امریکہ میں داخلہ پر پابندی عائد کی تھی۔ اس صدارتی حکم نامہ کو سیاٹل کی مقامی عدالت نے معطل کر دیا تھا۔ اس فیصلہ کے خلاف امریکی محکمہ انصاف نے اپیلٹ کورٹ میں درخواست دائر کی تھی جو مسترد کر دی گئی جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سوشل میڈیا پر اپنے ردعمل میں عدالتی فیصلہ کو سیاسی قرار دے دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارے ملک کی سلامتی دائو پر لگی ہوئی ہے۔ اب سپریم کورٹ میں جائیں گے اور آخرکار قانونی فتح ہماری انتظامیہ کی ہی ہو گی۔

مزید : بین الاقوامی