صوبہ پنجاب میں یکم اپریل سے قبل کپاس کی کاشت پر مکمل پابندی عائدکردی گئی

صوبہ پنجاب میں یکم اپریل سے قبل کپاس کی کاشت پر مکمل پابندی عائدکردی گئی

  

لاہور ( کامرس رپور)ایڈیشنل سیکرٹری زراعت(ٹاسک فورس) پنجاب بینش فاطمہ ساہی نے کہا ہے کہ صوبہ بھر میں یکم اپریل سے قبل کپاس کی کاشت پر مکمل پابندی عائدکردی گئی ہے جس کیلئے کاشتکاروں کو بھر پور آگاہی دی جائے ۔ کپاس کی چھڑیوں کے ڈھیروں کی الٹ پلٹ کا سلسلہ جاری ہے جس کیلئے محکمہ زراعت اوردوسرے سٹیک ہولڈرز پر مشتمل ٹیمیں اپنے کام کی رفتار میں مزید تیزی لائیں تاکہ مشترکہ کاروائیوں سے ف سیزن مینجمنٹ کے سلسلہ میں دئیے گئے اہداف حاصل کئے جا سکیں۔ان خیالات کا اظہا رانہوں نے بہاو لپور میں جننگ فیکٹریوں وآئل ملز میں کچرے کی تلفی اور اینٹوں کے بھٹوں میں کپاس کے کچرے کو جلانے کے عمل کی مانیٹرنگ کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ آئندہ سیزن میں کپاس کی بھر پورپیداوار اور اعلیٰ کوالٹی کی روئی کے حصول کیلئے کاٹن کیلنڈر پرعمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔ تمام سٹیک ہولڈرز گزشتہ برس کی طرح محکمہ زراعت کا بھر پور ساتھ دیں تاکہ آف سیزن مینجمنٹ مہم کے دوران گلابی سنڈی کے لاروے کا تدارک یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اگیتی کاشتہ کپاس پر گلای سنڈی کے حملہ کے امکانات بڑھ جاتے ہیں یہی وجہ ہے کہ زرعی سائنسدانوں اور ماہرین کی مشاورت سے حکومت پنجاب محکمہ زراعت نے کپاس کی اگیتی کاشت پر پابندی کا فیصلہ کیا ہے۔جنرز اور پیسٹی سائیڈز انڈسٹری سے وابسطہ تمام لوگ کپاس کی آف سیزن مینجمنٹ کے سلسلہ میں محکمہ زراعت کے ساتھ ملکر کام کریں تاکہ اس مہم کی کامیابی سے مثبت نتائج برآمد ہوسکیں۔شعبہ (پیسٹ وارننگ اور توسیع )کا عملہ انڈسٹری کے ساتھ مل کر کپاس کی آف سیزن مہم بھر پور انداز میں چلائیں۔انہوں نے کہا کہ کپاس کی سفید مکھی وگلابی سنڈی کے تدارک کیلئے فیلڈ ٹیموں کو متحرک کیا گیا ہے جس کی باقاعدگی سے مانیٹرنگ کی جارہی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ آئندہ سال کپاس کی کاشت کے فروغ کیلئے کاشتکاروں کو دو لاکھ ایکڑ کیلئے کپاس کا بیج سبسڈی پر دیا جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ زراعت کاشتکاروں کو اعلیٰ قدر فصلوں کی کاشت کے فروغ اور ڈرپ اریگیشن بارے بھی رہنمائی فراہم کرے۔

مزید :

کامرس -رائے -اداریہ -