فیض آباد دھرنا، راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کرنے عدالت برہم

فیض آباد دھرنا، راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کرنے عدالت برہم

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) فیض آباد دھرنا کیس کی سماعت کے دوران راجہ ظفرالحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کرنے پر عدالت نے شدید برہمی کا اظہار کیا ہے۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے فیض آباد دھرنا کیس کی سماعت کی، اس موقع پر چیف کمشنر ، آئی جی اسلام آباد اور ڈی جی آئی بی عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔عدالت نے سیکرٹری دفاع، داخلہ اور سیکرٹری قانون کو بھی رپورٹ سمیت طلب کر رکھا تھا جبکہ ڈائریکٹر جنرل انٹیلی جنس بیورو وائرل آڈیو ریکارڈنگ سے متعلق رپورٹ پیش نہ کرسکے جس پر عدالت نے ان کی سرزنش کی اور 12 فروری تک رپورٹ طلب کرلی۔سماعت کے دوران راجہ ظفر الحق کمیٹی کی رپورٹ پیش نہ کرنے پر بھی عدالت نے شدید برہمی کا اظہار کیا اور سیکریٹری دفاع کو دوبارہ رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کہا کہ سیکریٹری دفاع رپورٹ میں بتائیں کہ مظاہرین سے معاہدے میں آرمی چیف کا نام کیوں استعمال ہوا۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیے کہ عدالت میں رپورٹس جمع نہ کرانے کی صورت میں توہین عدالت کی کارروائی ہو گی۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -