ایجوکیشن سٹی کو فعال بنانے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے :گورنر سندھ

ایجوکیشن سٹی کو فعال بنانے کیلئے اقدامات کئے جائیں گے :گورنر سندھ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)گورنر سندھ محمد زبیر نے کہا ہے کہ کسی بھی ملک و قوم کی ترقی کے لئے اعلیٰ تعلیم نہایت ناگزیر ہے کیونکہ جامعات کے فارغ التحصیل اپنے اپنے شعبوں میں خدمات انجام دے کر ملک کو آگے کی جانب لے جاتے ہیں اس لئے وہ جتنے زیادہ بہتر تعلیم یافتہ ہوں گے ان کی کارکردگی اسی قدر بہتر ہوگی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج انڈس یونیورسٹی کے دورے کے موقع پر کیا۔ یونیورسٹی کے چانسلر خالد امین بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ انہوں نے کہا کہ نجی جامعات کے قیام سے نصاب تعلیم میں بہتری، جدید ترین طریقہ تعلیم کا استعمال اور پُراعتماد طالب علموں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے جوکہ ایک بڑی کامیابی ہے کیونکہ ان کے ذریعہ فارغ گریجویٹس کو پروفیشنل میدان میں دنیا کے ساتھ چلنے اور مقابلہ کرنے کی صلاحیت حاصل ہورہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحقیق جامعات کا بنیادی کام ہونا چاہئیے کیونکہ مختلف شعبہ جات میں نت نئی تحقیق اور ایجادات کے باعث ان میں تواتر سے تغیر اور تبدیلی آرہی ہے جس سے بھرپور استفادہ دینے کے لئے تحقیق کو مزید فروغ دینا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ نجی اعلیٰ تعلیمی اداروں نے سرکاری شعبہ کی جامعات کی کارکردگی بہتر بنانے میں بھی کردار ادا کیا ہے اور سرکاری شعبہ کی جامعات میں بھی تحقیق کے فروغ اور طالب علموں اور فیکلٹی کے لئے سہولیات کی دستیابی پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایجوکیشن سٹی تعلیم کے فروغ کا ایک اہم منصوبہ ہے، جہاں مختلف جامعات اپنے کیمپس قائم کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسے فعال بنانے کے ضمن میں حائل مشکلات اور رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں گے۔ گورنر سندھ نے کہاکہ انڈس یونیورسٹی نے نہایت کم عرصہ میں نجی جامعات میں اپنی جگہ بنائی ہے اور یہاں دی جانے والی معیاری تعلیم اسے ایک ممتاز تعلیمی ادارہ بنانے میں اہم کردار ادا کررہی ہے۔ گورنر سندھ مزید کہا کہ وہ یونیورسٹی کے طالب علموں کا اعتماد دیکھ کر بہت متاثر ہوئے ہیں۔ گورنر سندھ نے کہاکہ نوجوان ہمارا مستقبل ہیں ان کی حوصلہ افزائی نہایت ضروری ہے تاکہ انہیں پر اعتماد بنا کر معاشرے کی تعمیر و ترقی میں شامل کیا جاسکے۔ اس موقع پر گورنر سندھ کو بتایا گیا کہ یونیورسٹی کو2012 میں چارٹر ملا تھا اور اس وقت یونیورسٹی میں 5000طالب علم تعلیم حاصل کررہے ہیں۔ چانسلر خالد امین نے گورنر سندھ کو یونیورسٹی کو درپیش مسائل کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے تعاون کی درخواست کی۔

مزید :

تجزیہ -کراچی صفحہ اول -