بٹ خیلہ ،علماء کرام کا حکومتی اعزازیہ مسترد کرنے کا فیصلہ

بٹ خیلہ ،علماء کرام کا حکومتی اعزازیہ مسترد کرنے کا فیصلہ

  

بٹ خیلہ (بیورورپورٹ )مالاکنڈ ایجنسی سخاکوٹ کے علماء کرام اور ائمہ کرام نے صوبائی حکومت کی جانب سے ائمہ کرام کیلئے دس ہزار ماہانہ اعزازیہ کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ علماء کے خلاف ایک سازش اور انکو بلیک میل کرنے کی کوشش ہے ۔علمائے کرام اس سازش کو ناکام بنادینگے۔ یکم اپریل کو ضلع پشاور میں غلبہ اسلام کانفرنس ہو گی۔جس میں دس لاکھ افراد شرکرکت کرینگے۔ ان خیالات کا اظہار جمعیت علماء اسلام ضلع ملاکنڈ کے جنرل سیکرٹری مفتی کفایت اللہ نے مدرسہ حدیقہ ۃالقران پڑنگے میں عظمت ائمہ کرام کانفرنس اور بعدازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہو ئے کیا۔اس موقع پر ضلعی نائب امیر وارث خان، تحصیل ڈپٹی جنرل سیکرٹری قاری افتخار، سینئرنائب امیر مولانا سلیمان اور مولانا مفتی فضل صادق صاحب بھی مو جود تھے۔انہوں نے کہا کہ مسجد کے تقدس اورممبر ومحراب کی بالادستی کو کسی صورت پامال کرنے کی اجازت نہیں دینگے۔مساجد کی امامت علماء کی معاشی مجبوری نہیں بلکہ دینی فریضہ ہے اور اعزازیہ کے نام محض چند ہزار روپے لیکر حکومت کی غلط پالیسیوں اور مذموم مقاصد میں حصہ دار نہیں بنیں گے۔انہوں نے کہا کہ مدارس اور مساجد کے ائمہ کرام کو بے جا تنگ نہ کیا جائے ۔مساجد اور مدارس کی بقااور حفاظت پوری دنیا کی حفاظت ہے۔انہوں نے کہا کہ جے یو آئی ماوارائے عدالت قتل کی بھر پور مذمت کرتی ہے۔حکومت قصور،مردان اور کوہاٹ واقعات کے مجرمان کو سخت سے سخت سزا دیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے صوبہ خیبر پختونخوا سمیت پوری ملک میں برسراقتدار ائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -تجزیہ -کراچی صفحہ اول -