مسلم لیگ (ن) کے بڑے رہنماءنے بلوچستان سے اپنے ہی ایم پی اے کو سینیٹ الیکشن کیلئے کتنے کروڑ روپے دینے کی پیشکش کی؟ حامد میر نے پروگرام میں میسج پڑھ کر سنا دیا، رقم جان کر ہر کوئی سکتے میں آ گیا

مسلم لیگ (ن) کے بڑے رہنماءنے بلوچستان سے اپنے ہی ایم پی اے کو سینیٹ الیکشن ...
مسلم لیگ (ن) کے بڑے رہنماءنے بلوچستان سے اپنے ہی ایم پی اے کو سینیٹ الیکشن کیلئے کتنے کروڑ روپے دینے کی پیشکش کی؟ حامد میر نے پروگرام میں میسج پڑھ کر سنا دیا، رقم جان کر ہر کوئی سکتے میں آ گیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے انکشاف کیا ہے کہ بلوچستان میں مسلم لیگ (ن) کے ایک ایم پی اے کو مسلم لیگ (ن) ہی کے ایک بڑے رہنماءنے سینیٹ الیکشن میں ساتھ رہنے کیلئے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی ہے۔

یہ انکشاف انہوں نے اس وقت کیا جب سردار نبیل گبول نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے بلوچستان میں مسلم لیگ (ن) کی جانب سے اپنے ہی ایم پی ایز کو پیسے دینے کے معاملے پر گفتگو کی۔ انہوں نے کہا کہ ”کبھی آپ نے تاریخ میں سنا ہے کہ اپنی ہی جماعت کو خریدنے کیلئے اپنے ہی ایم پی ایز کو پیسے دینے پڑ رہے ہوں۔ یعنی بلوچستان میں مسلم لیگ (ن) اپنے ہی ناراض ایم پی ایز کو خرید رہی ہے تاکہ وہ زیادہ سے زیادہ اپنے سینیٹرز منتخب کروا سکے۔

بلوچستان کے ایم پی ایز میرے ذاتی دوست ہیں اور مجھے ایک ایک شخص کا پتہ ہے کہ کس نے کس شخص سے رابطہ کیا اور کتنے روپے کی پیشکش کی ہے جبکہ گزشتہ روز ایک پروگرام میں پہلے ہی یہ بتا چکا ہے اس وقت بلوچستان میں ایک ایم پی کا ریٹ 30 کروڑ روپے تک پہنچ گیا ہے۔“

اس موقع پر حامد میر نے کہا کہ انہیں بلوچستان سے مسلم لیگ (ن) کے ایک ایم پی اے، جو اب وزیر بھی ہیں، کا پیغام موصول ہوا ہے جسے سینیٹ الیکشن میں ساتھ رہنے کیلئے مسلم لیگ (ن) ہی کے ایک بہت بڑے رہنماءنے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی ہے البتہ میں دونوں کا نام نہیں بتاﺅں گا۔

انہوں نے پیغام پڑھ کر سناتے ہوئے کہا ”اللہ کو حاضر ناظر جان کر کہتا ہوں کہ اس تبدیلی میں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں تھا، حتیٰ کہ مجھے بھی مسلم لیگ (ن) کے لیڈر کی طرف سے 50 کروڑ روپے کی پیشکش ہوئی۔“ حامد میر نے کہا کہ جس شخص نے مذکورہ ایم پی اے کو پیشکش کی ہے وہ مسلم لیگ (ن) کا بہت بڑا لیڈر ہے۔

حامد میر کی بات سننے کے بعد نبیل گبول نے کہا کہ میری بات سچ ہوئی نہ تو حامد میر نے کہا کہ آپ اس بے چارے کا ریٹ کم بتا رہے ہیں جس پر سٹوڈیو میں بیٹھے تمام افراد قہقہہ لگانے لگے۔ حامد میر نے مزید کہا کہ مذکورہ ایم پی اے نے اپنے پیغام میں جو لکھا ہے کہ اس میں پیپلز پارٹی کا کوئی کردار نہیں تھا تو میں اس سے اتفاق نہیں کرتا کیونکہ پیپلز پارٹی کا کردار تھا، جبکہ یہ ایم پی اے مسلم لیگ (ن) کا ہے جسے ساتھ رہنے کیلئے مسلم لیگ (ن) کے بندے کی طرف سے پیشکش کی جا رہی ہے۔

۔۔۔ویڈیو دیکھیں۔۔۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -علاقائی -اسلام آباد -بلوچستان -کوئٹہ -پنجاب -لاہور -