دنیا کا انوکھا ترین فیشن شو، اس میں تمام مردوں کے چہروں پر خنزیر کے ماسک کیوں چڑھا دئیے گئے؟ جان کر ہر مرد افسردہ ہوجائے

دنیا کا انوکھا ترین فیشن شو، اس میں تمام مردوں کے چہروں پر خنزیر کے ماسک کیوں ...
دنیا کا انوکھا ترین فیشن شو، اس میں تمام مردوں کے چہروں پر خنزیر کے ماسک کیوں چڑھا دئیے گئے؟ جان کر ہر مرد افسردہ ہوجائے

  

نیویارک(نیوز ڈیسک) جنسی ہراس کے خلاف آواز اٹھانے کے لئے انٹرنیٹ پر متعارف کروائے گئے ہیش ٹیگ ’می ٹو‘ نے دنیا بھر کے سوشل میڈیا صارفین کو خوب متاثر کیا ہے اور ہر ملک کی خواتین نے اس ہیش ٹیگ کے ذریعے اپنی آواز اٹھائی ہے۔ اسی ہیش ٹیگ کے پیغام کو آگے بڑھانے کے لئے امریکا میں ایک فیشن شو کا بھی اہتمام کیا گیا، لیکن یہ شو اس لحاظ سے بہت ہی منفرد تھا کہ اس شامل تمام ماڈلز ایسی خواتین تھیں جو جنسی ہراس کا نشانہ بن چکی ہیں اور ان کے ساتھ ماڈلنگ کرنے والے مردوں نے خنزیر کے ماسک پہن رکھے تھے۔

اس فیشن شو کا اہتمام نیویارک فیشن ویک کے موقع پر ملبوسات کی مشہور کمپنی ’امریکن وارڈروب‘ کی کرییٹو ڈائریکٹر مریم چالک نے کیا تھا۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ادارے کو خواتین کی فلاح کے لئے استعمال کرنا چاہتی تھیں اور یہی سوچ کر انہوں نے اس فیشن شو کا اہتمام کیا۔ انہوں نے اس فیشن شو کے اغراض و مقاصد کے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا ”یہ ایک ایسا موقع ہے جب ہر کسی کی توجہ خواتین کے خلاف کئے جانے والے جرائم اور خصوصاً جنسی ہراس کی جانب ہے۔ میں نے سوچا کیوں نہ اس موقع کو استعمال کرتے ہوئے ایک ایسے فیشن شو کا اہتمام کیا جائے جس میں تمام ماڈلز ایسی خواتین ہوں جنہیںجنسی ہراس کا نشانہ بنایا جاچکا ہے۔ اس شو کو منعقد کرنے کا مقصد جنسی ہراس کے خلاف آگاہی پیدا کرنا ہے۔ مجھے امید ہے کہ لوگ اس مسئلے کو مزید سنجیدگی سے دیکھیں گے اور معاشرے سے اس ناسور کے خاتمے کے لئے اپنا کردار بھرپور طریقے سے ادا کریں گے۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -