فیصل آبادمیں معروف برانڈ کے ٹرائل روم کیس میں نئے انکشافات

فیصل آبادمیں معروف برانڈ کے ٹرائل روم کیس میں نئے انکشافات
فیصل آبادمیں معروف برانڈ کے ٹرائل روم کیس میں نئے انکشافات

  

فیصل آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) فیصل آبا د میں کپڑوں کے معروف برانڈ ”لیوائز“ میں خواتین کے ٹرائی روم میں خفیہ کیمرے سے متعلق کیس میں تہلکہ خیز انکشافات سامنے آئے ہیں۔

فیصل آباد میں کپڑوں کے معروف برانڈ لیوائز میں خواتین کے ٹرائی روم میں خفیہ کیمرے کی ویڈیو اور تصاویر بنانے والے شخص کانجی چینل ”جیو نیوز“ سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جب وہ اپنی فیملی کے ساتھ برانڈ پہنچا تو انہیں وہاں کوئی چیز پسند نہ آئی۔شکایت کنندہ شخص نعمان ظفر نے بتایا کہ کوئی چیز پسند نہ آئی تو منیجر نے بار بار زور دیا کہ آپ یہ چیز ٹرائی کریں یہ بہت اچھی ہے، اسی دوران مجھے لیڈیز ٹرائی روم میں تھوڑی سرگوشیاں محسوس ہوئیں جس پر میں نے خواتین سے کہا کہ ذرا دیکھ بھال کر اندر جائیے گا، مجھے لگتا ہے کہ ٹرائی روم میں کوئی آ جا رہا تھا۔خفیہ کیمرے کی تصاویر لینے والے شخص نے بتایا کہ جب خواتین ٹرائی روم میں گئیں تو انہوں نے وہاں دو باکسز دیکھے جن میں سے ایک میں سے لینز نظر آ رہا تھا، گھر کی خواتین نے جونہی مجھے اطلاع دی تو میں نے وہاں جا کر خفیہ کیمرے کی تصاویر لے لیں۔اس شخص نے مزید بتایا کہ میں نے وہاں موجود منیجر کو بلا کر جب واقعے کی اطلاع کی تو وہ مجھے ایک سائیڈ پر لے گیا اور کہا کہ چھوڑیں یہ آپ کا کام نہیں ہے، اسی دوران میں نے مزید تصاویر لے کر 15 پر کال ملا دی جو کچھ ہی سیکنڈ چلی ہو گی کہ منیجر نے میرا فون چھین کر سب سے پہلے وہ تصاویر مٹائیں اور اسی دوران لیڈیز ٹرائی روم سے وہ خفیہ کیمرا بھی نکال لیا گیا۔نعمان ظفر نے مزید بتایا کہ اس سارے واقعے کے بعد منیجر نے مجھے کہا کہ بتائیں کہاں ہے کیمرا، آپ مجھ پر الزام لگا رہے ہیں اور میرے ساتھ ہاتھا پائی بھی کی اور کہا کہ میں آپ کو پولیس کے حوالے کرتا ہوں، اس صورت حال میں مجبوراً مجھے ان سے معافی مانگ کر وہاں سے جانا پڑا۔متاثرہ شخص نے بتایا کہ میں نے دکان سے باہر نکل کر پولیس کو ساری صورت حال سے آگاہ کیا جو بروقت وہاں پہنچی اور تحقیقات کی تو انہیں کچھ نہیں ملا لیکن جب پولیس نے میرے موبائل کا صاف کیا ہوا ڈیٹا ریکور کیا تو انہیں وہ تمام چیزیں مل گئیں لیکن پھر بھی سٹور کے منیجر اور عملے سے ماننے سے انکار کردیا۔نعمان نے بتایا کہ پولیس نے جب سٹور میں لگے سی سی ٹی وی کیمرے کی ویڈیو حاصل کی تو اس میں خفیہ کیمرے سمیت سب کچھ سامنے آ گیا۔

پولیس کی جانب سے گرفتار کیے گئے سٹور کے خاکروب نے دوران تفتیش انکشاف کیا ہے کہ وہ ایک خاتون کی ویڈیو بنا کر صاف بھی کر چکا ہے لیکن تفتیش کے دوران مزید انکشافات بھی آ سکتے ہیں۔

دوسری جانب کپڑوں کے معروف برانڈ لیوائز کی انتظامیہ نے اس واقعے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ صارفین کی سیفٹی اور سیکیورٹی ہماری پہلی ترجیح ہے، فیصل آباد میں پیش آنے والے واقعے پر صدمہ پہنچا۔

لیوائز برانڈ کے مطابق جو دو افراد اس واقعے میں ملوث تھے وہ لیوائز کے ملازم نہیں تھے بلکہ انہیں اسٹاف ایجنسی کے ذریعے بھرتی کیا گیا تھا، دونوں افراد کو اسٹاف ایجنسی نے نوکری سے برطرف کر دیا ہے اور مقامی حکام سے مل کر واقعے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ دو روز قبل فیصل آباد میں کپڑوں کے ایک معروف برانڈ میں خواتین کے ٹرائی روم میں خفیہ کیمرے کا انکشاف ہوا تھا۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -فیصل آباد -