جمال خاشقجی قتل کیس، اقوام متحدہ کی رپورٹ کے بعد سعودی عرب بھی میدان میں آگیا، واضح اعلان کردیا

جمال خاشقجی قتل کیس، اقوام متحدہ کی رپورٹ کے بعد سعودی عرب بھی میدان میں ...
جمال خاشقجی قتل کیس، اقوام متحدہ کی رپورٹ کے بعد سعودی عرب بھی میدان میں آگیا، واضح اعلان کردیا

  

ریاض(ویب ڈیسک) سعودی وزیر برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے کہا ہے کہ جمال خاشقجی قتل کی تحقیقات کے سلسلے میں کسی کو ہمیں ڈکٹیٹ کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز اقوام متحدہ کے تفتیش کاروں کا کہنا تھا کہ سعودی عرب نے جمال خاشقجی قتل کیس کی تحقیقات کرنے والوں کی صلاحیتوں کو کمزور کرنے کی کوشش کی۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب نے جمال خاشقجی قتل کی تحقیقات میں کسی قسم کی ڈکٹیشن لینے سے انکار کردیا ہے، سعودی وزیر برائے خارجہ امور عادل الجبیر نے کہا ہے کہ جمال خاشقجی قتل کا الزام سعودی ولی عہد پر لگانے کا سلسلہ بند ہونا چاہئے۔عادل الجبیر کا کہنا تھا کہ سعودی عرب جانتا ہے کہ تحقیقات کس طرح کرنی ہیں اس کیس میں مزید ڈکٹیشن برداشت نہیں کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ امریکا کی جانب سے ایک نیا الزام سامنے آیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سعودی ولی عہد نے جمال خاشقجی کو دھمکی دی تھی کہ وہ گولی کی طرح ان کے پیچھے آئیں گے اس طرح کے الزامات بے بنیاد ہیں۔

مزید : عرب دنیا