ملکہ حسن کا سابق صدر پر جنسی ہراسگی کا الزام

ملکہ حسن کا سابق صدر پر جنسی ہراسگی کا الزام
ملکہ حسن کا سابق صدر پر جنسی ہراسگی کا الزام

  

سین ہوزے(مانیٹرنگ ڈیسک)وسطی امریکہ کے ملک کوسٹا ریکا کے سابق صدر پر ایک اور خاتون نے جنسی ہراسگی کا الزام عائد کر دیا ہے۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق گزشتہ چند ماہ میں متعدد خواتین آسکر ایریاس کے خلاف شکایات درج کروا چکی ہیں اور اب سابق ملکہ حسن یازمین موریلیس کا نام بھی صدر آسکر پر جنسی ہراسگی کا الزام عائد کرنے والی خواتین کی فہرست میں شامل ہو گیا ہے۔

یازمین نے پولیس کو درج کروائی گئی رپورٹ میں بتایا ہے کہ 2015ءمیں ان کا سابق صدر سے سوشل میڈیا کے ذریعے رابطہ ہوا اور انہوں نے ملاقات کے لیے یازمین کو گھر آنے کی دعوت دی۔یازمین کا کہنا تھا کہ ”میں آسکر ایریاس کے سین ہوزے میں واقع گھر میں گئی تو انہوں نے مجھے زبردستی پکڑ کر گلے لگا لیا، میرے جسم کے پوشیدہ حصوں کو چھونے لگے اور بوس وکنار شروع کردی۔ اتنی معروف شخصیت کا یہ رویہ دیکھ کر مجھے شدید جھٹکا لگا، میں ان کی شخصیت سے بہت متاثر تھی اور مجھے ان سے ایسی حرکت کی قطعاً نہیں تھی۔“

واضح رہے کہ 78سالہ آسکر ایریاس 1986سے 1990ءاور دوسری بار 2006سے 2010ءتک دو بار کوسٹاریکا کے صدر رہے۔ انہوں نے تمام خواتین کی طرف عائد جنسی ہراسگی کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”میں نے زندگی بھر صنفی مساوات کا پرچار کیا ہے اورمیں کسی خاتون کو جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے کا سوچ بھی نہیں سکتا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس