میجر لینگ لینڈز کی خدمات کا اعتراف!

میجر لینگ لینڈز کی خدمات کا اعتراف!
میجر لینگ لینڈز کی خدمات کا اعتراف!

  


یہ تو سوئے ہوئے بچے کا منہ چومنے والی بات ہوئی کہ ایک ایسی شخصیت جس کا تعلق ماضی کے حکمران ملک سے ہے، اس نے پاکستان کو اپنے ملک کے طور پر پسند کیا اور یہاں انسانیت کی خدمت کی، وہ گزشتہ 66سال سے تعلیمی میدان میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں، لیکن کسی نے ان کو متعارف ہی نہیں کرایا اور وہ بھی سر جھکائے اپنے مضبوط عزم کے ساتھ تعلیم کے میدان میں سرگرم رہے۔جیفری ڈوگلس لینگ لینڈزالمعروف میجر لینگ لینڈز اب چھیانوے برس کے ہو گئے ہیں وہ آج بھی چاق و چوبند ہیں اور ان کی یادداشت بھی بہت اچھی ہے اور اب بھی وہ اپنی خدمات جاری رکھنے کے خواہش مند ہیں، تھرڈ ورلڈ سالیڈیریٹی کے چیئرمین آنریری آلڈرمین مشتاق لاشاری نے جب چن ون شاپنگ سنٹر کے ریسٹورنٹ میں لاہور سٹی پروجیکٹ کے ڈائریکٹر جنرل کامران لاشاری اور چن ون معہ ریسٹورنٹ کے چیف ایگزیکٹو میاں کاشف اشفاق کی موجودگی میں میجر لینگ لینڈز کو بٹھا کر ان کا تعارف کرایا تو حاضرین بے اختیار تالیاں بجا کر داد دینے پر مجبور ہو گئے۔یہ محفل باقاعدہ سجائی گئی ، اس میں اراکین اسمبلی، دانشوروں،صحافیوں اور فن کاروں کو بھی مدعو کیا گیا تھا۔

مشتاق لاشاری ہمارے اپنے ہی ہیں، لیکن عرصہ بیتا جب برطانیہ گئے اور پھر وہیں کے ہو کر رہ گئے ، ان کا تعلق سیاسی جماعت سے رہا، تاہم تقریباً پچیس برس قبل جب انہوں نے صحافی ساﺅنڈرسیٹرلی کے ساتھ مل کر تھرڈ ورلڈ سالیڈیٹریٹی نام تنظیم بنائی تو بتدریج پارٹی سیاست سے الگ ہوتے چلے گئے کہ اس فورم کے مقاصد میں امن، جمہوریت،انصاف اور انسانی حقوق کا تحفظ تھے اس لئے انہوں نے یہی بہتر جانا کہ عملی سیاست سے غیر جانبداری اختیار کر لی جائے۔پچیس سال سے وہ اس تنظیم کے ذریعے کانفرنسوں، مجالس مذاکرہ اور تقریبات کا انعقاد کرکے تنظیمی مقاصد کے لئے جدوجہد کرتے رہے اور اب بھی کررہے ہیں، ان کے پلیٹ فارم سے پاکستان کی سابق وزیراعظم شہید بے نظیر بھٹو اور الجزائر کے مرحوم صدر احمد بن بیلا سمیت دنیا بھر کے درجنوں ممالک کے اہم وزرائ، عہدیدار، سفارت کار اور اراکین پارلیمنٹ خطاب کر چکے ہوئے ہیں۔مشتاق لاشاری کے مطابق چھ سال قبل تنظیم نے ایک کل جماعتی گروپ تشکیل دیا، اور اب اس تنظیم اور گروپ کو برطانیہ سمیت ایک سو سے زائد اراکین پارلیمنٹ، دانشوروں، صحافیوں اور معروف شخصیات کی معاونت حاصل ہے۔تھرڈ ورلڈ سالیڈیٹری دنیا نے مغرب، مشرق وسطیٰ، افریقہ اور ایشیاءسمیت کئی ممالک میں مجالس مذاکرہ اور سالانہ ڈنر جیسی تقاریب کا انعقاد کرایا ہے اور اب 2014ءکا سالانہ ڈنر اور تقریب لاہور میں 12اپریل کو منعقد کی جائے گی۔

مشتاق لاشاری نے بڑے ہی پرجوش انداز میں بتایا کہ یہ ڈنر درحقیقت میجر لینگ لینڈز کے ساتھ ایک شام سے موسوم کردیا گیا ہے اور اسے ایک شاندار تقریب کے طور پر منایا جائے گا جس میں فن کار اپنے فن کا بھی مظاہرہ کریں گے، میجر لینگ لینڈز کو ان کی خدمات پر خراج تحسین پیش کیا جائے گا اور ان کی زندگی بھر کی محنت سے حاضرین کو آگاہ کیا جائے گا۔میجر لینگ لینڈز کا ایک تفصیلی انٹرویو بھی ویڈیو کے ذریعے دکھایا جائے گا، جس میں وہ خود اپنی زندگی کے حالات بتا رہے ہوں گے۔ مشتاق لاشاری کے مطابق میجر لینگ لینڈز نے برطانوی فوج کے علاوہ پاکستان آرمی میں بھی خدمات سرانجام دیں۔جب برصغیر کی تقسیم عمل میں آئی تو میجر نے موازنہ کیا اور ان کو احساس ہوا کہ بھارت کے رہنما پاکستان کے حوالے سے بغض رکھتے ہیں اور ان کے ارادے بھی اچھے نہیں ہیں تو انہوں نے پاکستان میں رہ کر تعلیمی خدمات سرانجام دینے کو ترجیح دی، ان کے شاگردوں میں نمایاں حضرات میں سابق صدر فاروق لغاری(مرحوم) معین افضل، سبطین فضلی، ندیم ممتاز، عمران خان، یار محمد جمالی، میر ظفر اللہ جمالی، چودھری اعتزاز احسن، محمود حسین(سابق گورنر پنجاب) علی قلی خان(ریٹائرلیفٹیننٹ جنرل) یوسف صلاح الدین، فخر امام اور طلال بگٹی جیسے حضرات شامل ہیں کہ وہ ایچی سن کالج میں بھی پڑھاتے رہے ہیں۔

مشتاق لاشاری کے مطابق میجر لینگ لینڈز ان دنوں اپنے گھر پر ریٹائرڈزندگی گزار رہے ہیں، تاہم اب بھی شعبہ تعلیم کے لئے کتاب لکھ رہے ہیں اور مزید خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں، اس موقع پر کامران لاشاری نے بڑے موثر الفاظ میں معزز مہمان کی خدمات کو سراہا اور کہا کہ ایسی ہستیاں تاریخ میں کبھی کبھار پیدا ہوتی ہے جو اپنا سب کچھ ایک مشن کے لئے وقف کردیں۔انہوں نے کہا کہ ایسی شخصیات کی خدمات کا اعتراف خدمت کا جذبہ پیدا کرنے میں مہمیز کا کام دیتا ہے، میاں کاشف اشفاق نے بھی مختصر الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا اور کہاکہ وہ ان (میجر) کی خدمات کے معترف ہیں اور ان کے اعزاز میں سالیڈیریٹری کے سالانہ ڈنر کو ایک جشن بنانے میں مکمل تعاون کریں گے۔

خود میجر لینگ لینڈز نے مختصر بات کی اور بتایا کہ وہ پاکستانی ہیں اور انہوں نے اپنی مرضی اور خوشی سے یہاں رہنا پسند کیا اور تعلیمی میدان میں خدمات کو شعار بنایا اور اب 96برس کی عمر میں بھی وہ خدمت کا جذبہ رکھتے ہیں اور تعلیمی میدان میں ان کی خدمات حاضر ہیں، حاضرین نے ان کو بہت داددی اور یقینا ان کی خدمات کو سراہا اس سلسلے میں مشتاق لاشاری کو شاباش دی گئی کہ انہوں نے میجر لینگ لینڈز کو بلایا اور اب ان کی خدمات پر خراج تحسین پیش کرنے کے لئے تقریب بھی منعقد کرا رہے ہیں۔اس اچھی مختصر تقریب کا اختتام میاں کاشف اشفاق کی طرف سے چاءکی دعوت پر ہوا، اچھی تقریب اچھے تاثر کی حامل رہی۔ ٭

مزید : کالم


loading...