وہ باتیں جو لڑائی کے بعد ہرگز نہیں کرنی چاہئیں

وہ باتیں جو لڑائی کے بعد ہرگز نہیں کرنی چاہئیں
وہ باتیں جو لڑائی کے بعد ہرگز نہیں کرنی چاہئیں

  

لندن(نیوزڈیسک)ہر رشتے میں لڑائی کبھی نا کبھی ضرور ہوتی ہے اور میاں بیوی میں تو ضرور کبھی کبھار تلخی آجاتی ہے لیکن اس کے بعد صلح بھی ہو جاتی ہے۔ اس صلح کے بعد بھی کچھ لوگ ایسے کام کرنے لگتے ہیں جس سے دوبارہ لڑائی شروع ہو جاتی ہے۔

خواتین کی وہ اقسام جن کے ساتھ مردوں کا گزارہ نہیں ہوتا،مزید جانئے

آئیے آپ کو چند ایسی باتوں کے بارے میں بتائیں جو صلح کے بعد ہرگز نہیں کرنی چاہئیں۔

کبھی بھی ’مصنوعی‘صلح مت کریں

کچھ لوگ لڑائی کو وقتی طور پر ختم کرنے کے لئے بظاہر صلح کر لیتے ہیں لیکن دل سے وہ اس بات کو نہیں بھلاتے جس کی وجہ سے بہت جلد حالات اسی نہج پر پہنچ جاتے ہیں جہاں سے وہ شروع ہوئے تھے۔ اگر آپ نے صلح کرنی ہو تو ہر گز ’مصنوعی‘ صلح مت کریں بلکہ دل سے تمام رنجشوں اور تلخیوں کو نکال کر قدم آگے بڑھائیں۔

ہمسفر کے غصے کو ٹھنڈا ہونے دیں

معاملے کو ختم کرنے میں ہر گز اپنے ہمسفر پر دباﺅ نہ ڈالیں بلکہ معاملے کو ختم ہونے میں تھوڑا سا وقت دیں کیونکہ اس طرح آپ کے ساتھی کا غصہ کم ہو جائے گا اور لڑائی ختم کرنے میں یہ بات معاون ثابت ہوگی۔مثال کے طور پر اگر ایک ساتھی غصیلا ہے تو اسے وقت دیں تا کہ اس کا غصہ کم ہوجائے اور پھر باآسانی معاملہ سلجھ جائے گا۔

لڑائی کی وجہ پرہی توجہ مرکوز نہ کریں

اکثر دیکھا گیا ہے کہ لوگ ان باتوں پر توجہ مرکوز کر کے بیٹھ جاتے ہیں جن کی وجہ سے لڑائی شروع ہوئی ہوتی ہے۔ اگر آپ اس غلطی کو دوبارہ نہ دہرانے کی غرض سے سوچ رہے ہیں پھر تو ٹھیک ہے لیکن اگر آپ کے دل میں یہ بات ہے کہ آپ کی تو کوئی غلطی ہی نہیں تھی اور دوسرے نے بلاوجہ اس بات کو لڑائی کی وجہ بنایا۔ہمیشہ یہ سوچیں کہ وہ غلطیاں دوبارہ نہیں دہرانی جن سے لڑائی ہوئی۔ اگر آپ یہ بات دل میں سوچ کر زندگی گزاریں گے تو پھر امید رکھی جا سکتی ہے کہ دوبارہ لڑائی نہیں ہوگی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس