حکومت تاجروں کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کرے : اسد مشہدی

حکومت تاجروں کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کرے : اسد مشہدی

راولپنڈی ( نیٹ نیوز) راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر سید اسد مشہدی نے کہا ہے کہ ٹیکس اصلاحات اور ٹیکس مسائل کے حل کیلئے حکومت کی طرف سے کاروباری برادری کو یقین دہانی کروائی گئی تھی لیکن باوجود کوشش کہ حکومت کی طرف سے کوئی مثبت ردعمل سامنے نہیں آ رہا ، ایس آر او 608 اور دیگر ٹیکس اصلاحات پر حکومت تاجروں کے موقف کی تائید کر چکی ہے پر بات چیت کیلئے وفاقی وزیر برائے خزانہ اسحق ڈار کے پاس ملاقات کا وقت نہیں ، آل چیمبر ز صدور کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے نہ ہوئے تونتائج کی ذمہ داری حکومت پر ہو گی ،کاروباری برادری کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو رہا ہے 9فروری 2015کو آل چیمبر صدور کانفرنس سے پہلے حکومت کے پاس وقت ہے معاملات کو بات چیت سے حل کر لے بصورت دیگر کاروباری برادری کے اس بار کے متفقہ ردعمل کو روکنا شاید حکومت کے بس میں نہ رہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیمبر سے جاری بیان میں کیا ۔اسد مشہدی نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی یقین دہا نی پر آل چیمبرز نے احتجاج کی کال کو واپس لیا تھا لیکن 2ماہ کا عرصہ گزر جانے کے باوجود مسئلے پر کوئی پیش رفت نہیں ہو سکی،اور تاجروں کو نوٹسسز ملنا بھی شروع ہو گئے،نہ صرف کاروباری برادری بلکہ حکومتی حلقے بھی ایس آر او 608 کو بد عنوانی اور رشوت ستانی کا نیا طریقہ قرار دے رہے ہیں ،کاروباری برادری مذکورہ ایس آر او کو کالا قانون قرار دے چکی ہے اور اسکی واپسی کے بغیر کوئی صورت قبول نہیں کیجائے گی ۔

صدر چیمبر نے کہا کہ ٹیکس اصلاحات اور 608کے ایشو پر حکومت کے تعاون کی ہر حد تک گئے لیکن حکومت کی معاملات میں عدم دلچسپی نے صورتحال کو دوراہے پر لا کھڑا کیا ہے، حکومت کو بتانا چاہتے ہیںکہ کاروباری برادری اب بھی احتجاج سے بچنے کے لئے حکومت کو وعدے یاد دلا رہی ہے کہ شاید ایوان میں بیٹھے حکمرانوں کو سمجھ آ جائے کہ اقتصادی ترقی میں کاروباری برادری کی مدد کے بغیر کچھ حاصل نہیں کیا جا سکتا نہ ہی منظور نظر لوگوں کے خیالات سے کوئی سدھار لایا جا سکتا ہے ،حکومت سے ایک بار پھر اپیل کرتے ہیں کہ وعدوں کو پورا کریں تا کہ

کاروباری برادری دلجمعی کے ساتھ ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکے۔

مزید : کامرس