ملک گیر بجلی کے بریک ڈاؤن کے دو دن بعد بھی سسٹم مکمل بحال نہ ہو سکا، بجلی کی آنکھ مچولی جاری

ملک گیر بجلی کے بریک ڈاؤن کے دو دن بعد بھی سسٹم مکمل بحال نہ ہو سکا، بجلی کی ...

لاہور(کامرس رپورٹر)ملک گیر بجلی کے بریک ڈاؤن کے دو دن بعد بھی سسٹم پوری طرح بحال نہیں ہو سکا ۔ ٹیکسٹائل اور فرنس ملز سمیت تمام انڈسٹریز کو مسلسل دوسرے دن سے بجلی کی فراہمی بند رہی ۔ ٹیکسٹائل ملوں سمیت دیگر ملوں نے شفٹیں مکمل بند کر دی جس سے لاکھوں افراد بے روز گار ہو گئے ۔ بجلی کی پیداوار کم ہونے کے باعث گزشتہ روز سارا دن و رات بد ترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رکھا گیا ۔متعدد مقامات پر مسلسل ایک گھنٹہ بجلی فراہمی نہیں کی گئی اور ہر پندرہ منٹ بعد یا آدھے گھنٹے کے بعدلوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ بجلی کی بدترین لوڈ شیڈنگ سے معمولات زندگی شدید متاثر ہوئے ۔ ترجمان این ٹی ڈی سی کے مطابق تمام شہروں میں بجلی بحال کر دی گئی ہے ۔ ابھی پوری پیداوار حاصل نہیں ہو رہی ہے جس کے باعث معمول سے زیادہ لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ انڈسٹریز کے لئے بھی لوڈ شیڈنگ کا شیڈول پیداوار کم ہونے کے باعث جاری نہیں کیا جا رہا ہے ۔ تربیلا و منگلا بحال ہو گئے ہیں پیداوار میں مرحلہ وار اضافہ ہو رہا ہے ۔ آج پیداوار معمول پر آ جائے گی ۔ لیسکو ذرائع کے مطابق لیسکو کو مجموعی ڈیمانڈ تین ہزار کے قریب ہے جبکہ صرف 1300 میگا واٹ بجلی مل رہی ہے جس کے باعث انڈسٹریز کے لئے تا حال شیڈول جاری نہیں کیا گیا ہے اور اس وجہ سے ہی گھریلو صارفین کے لئے شیڈول سے زائد لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے ۔ اپٹما کے چیرمین ایس ایم تنویر نے خصوصی گفتگو میں بتایا کہ ٹیکسٹائل انڈسٹری کو مسلسل دو روز سے بجلی نہیں مل رہی ہے جس کے باعث ملوں نے شفٹیں بند کر دی ہیں جس سے لاکھوں افراد بے روز گار ہو گئے ہیں صورتحال برقرار رہی تو مزید لاکھوں افراد بے روز گار ہو جائیں گئے ۔ انہوں نے وزیر اعظم سے اس حوالے سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ۔

مزید : صفحہ آخر