عامرخان کی 12فلمیں اب تک 3400کروڑ روپے کماچکی ہیں

عامرخان کی 12فلمیں اب تک 3400کروڑ روپے کماچکی ہیں
عامرخان کی 12فلمیں اب تک 3400کروڑ روپے کماچکی ہیں

  

ممبئی(نیوزڈیسک)عامر خان کی فلم PKاب تک 300کروڑ بھارتی روپے (480کروڑ پاکستانی روپے)سے زیادہ کما چکی ہے اور انہوں نے بالی ووڈ کے باقی خانوں کو بہت پیچھے چھوڑ دیا ہے ۔سلمان خان اور عامر خان کی کوئی بھی فلم اس حد تک کامیاب نہیں ہو سکی جتنی کامیابی عامر کی صرف ایک فلم نے اب تک حاصل کر لی ہے۔ماضی میں بھی ان کی کئی فلمیں انتہائی ہٹ رہیں اور آپ جان کر حیران ہوں گے کہ ان کی مختلف فلموں نے اب تک 2200کروڑ بھارتی روپے (3400کروڑ پاکستانی روپے)کما ئے ہیں۔

عامر خان نے مذہبی ”پنڈتوں“ کا پول کھول دیا،جاننے کے لئے کلک کریں

آئیے ان کی چند کامیاب ترین فلموں پر نظر ڈالتے ہیں اور جاننے کی کوشش کرتے ہیں کہ ان کی فلموں نے گذشتہ پندرہ سال میں کتنے پیسے کمائے۔

لگان(2001)

نئی صدی کے آغاز میں آنے والی فلم ’لگان ‘اس حد تک کامیاب تھی کہ اسے 74ویں اکیڈمی ایوارڈ کے لئے نامزد کیا گیااوریہ فلم آسکر ایوارڈ جیتنے کے انتہائی قریب تھی۔ اس فلم نے 54کروڑبھارتی روپے کمائے۔

دل چاہتا ہے(2001)

فرحان اختر کی فلم نے بالی ووڈ میں بہت ہل چل مچائی جبکہ عامر خان اس میں اہم کردار میں نظر آئے۔ اس فلم نے 26کروڑبھارتی روپے سے زائد کمائے۔

منگل پانڈے(2005)

تقریباًچار سال کی بریک کے بعد عامر خان نے ایک اور فلم دی جس میں ان کی گھنی موچھوں نے تمام لوگوں کو ان کی تعریف کرنے پر مجبور کیا۔گو کہ یہ فلم بہت زیادہ کامیاب نہیں ہوئی لیکن پھر بھی 54کروڑبھارتی روپے کمانے میں کامیاب ہوئی۔

رنگ دے بسنتی(2006)

اس فلم میں عامر خان کے کردار کو خوب پذیرائی ملی اور انہیں بہترین ایکٹر کا ایوارڈ بھی دیا گیا ۔ 2006کی یہ کامیاب ترین فلم تھی جسے بیرون ملک بھی بہت پسند کیا گیا اور یہ فلم 95کروڑبھارتی روپے باآسانی کما گئی۔

فنا(2006)

اس فلم میں خاص بات یہ تھی کہ اس نے 101کروڑبھارتی روپے کمائے اور پہلا موقع تھا کہ عامر کی کوئی فلم 100کروڑبھارتی روپے سے زائد کما سکی۔ اس فلم میں کاجل ان کے مقابل ہیروئین تھیں جبکہ اس فلم کے گانوں کو بھی بہت پسند کیا گیا۔

تاررے زمیں پر (2007)

اس فلم کی خاص بات یہ تھی کہ عامر خان اس کے پروڈیوسر اور ڈائریکٹر تھےجبکہ انتہائی دلچسپ کہانی اور بچوں کے مسائل پر بنائی گئی یہ فلم 88کروڑبھارتی روپے کما سکی۔

گجنی(2008)

یہ فلم اس حد تک کامیاب ہوئی کہ بیرون اور اندرون ملک اس کی کمائی 180کروڑبھارتی روپے سے تجاوز کرگئی۔

تھری ایڈیٹس(2009)

یہ پہلا موقع تھا کہ عامر خان کی پہلی فلم 200کروڑبھارتی روپے کمانے میں کامیاب ہوئی۔صرف بھارتی سینما میں یہ فلم 202کروڑبھارتی روپے کما سکی جبکہ بیرون اور اندرون ملک اس فلم نے 405کروڑبھارتی روپے کمائے۔

دھوبی گھاٹ(2011)

عامر خان کی بیگم کرن راﺅ کی ڈائریکشن میں بننے والی یہ فلم عامر خان کی سب سے مختلف فلم تھی۔ انتہائی کم بجٹ میں بننے والی اس فلم نے باآسانی اپنے پیسے پورے کر لئے جبکہ عامر خان نے اس کے لئے کوئی پیسے بھی چارج نہیں کئے۔ اس فلم کو 10کروڑبھارتی روپے میں بنایا گیا جبکہ یہ 15کروڑبھارتی روپے کمانے میں کامیاب ہوئی۔

تلاش (2012)

یہ فلم بہت زیادہ کامیاب نہیں تھی اور گرتے گرتے بھی یہ فلم 145کروڑبھارتی روپے کما گئی۔

دھوم(2013)

دسمبر 2013میں ریلیز ہونے والی اس فلم نےواقعی  دھوم مچا دی ۔3600سکرین پر پیش کی جانے والی اس فلم تمام ریکارڈ تو ڑ دئیے اور اسے سال کی کامیاب ترین فلم قرار دیا گیا۔اب تک یہ فلم 545کروڑبھارتی روپے کما چکی ہے اور ابھی بھی مختلف زبانوں میں اسے ریلیز کیا جارہا ہے اور ابھی یہ کمائی جاریہے۔

پی کے(2014)

عامر خان کے کئیریر کی کامیاب ترین فلم چند ہی دنوں میں صرف بھارت میں 300کروڑبھارتی روپے کا سنگ میل عبور کرچکی ہے اور دنیا بھر میں 575کروڑبھارتی روپے کما چکی ہے۔ فلمی حلقوں کا خیال ہے کہ یہ فلم وہ ریکارڈ بنائے گی جسے توڑنے کے لئے دیگر ڈائریکٹرز کو بہت زیادہ محنت اور کمال کرنا ہوگا۔

مزید : تفریح