سبزہ زار میں 100کنا؛ سرکاری اراضی پر قبضہ برقرار ، ایل ڈے اے کو اربوں کا نقصان

سبزہ زار میں 100کنا؛ سرکاری اراضی پر قبضہ برقرار ، ایل ڈے اے کو اربوں کا نقصان

  

 لاہور (اقبال بھٹی ) لاہور ڈویلپمنٹ اتھار ٹی کی سکیم سبزہ زار کے ڈی بلاک میں 100کنال سے زائد اراضی پر لینڈمافیا کا قبضہ ہے جس سے اتھارٹی کو اربوں کا نقصان جبکہ اتھارٹی 32سالوں میں بھی قبضہ گروپ سے اراضی واگزار کرانے میں ناکام ہو گئی ہے۔ موضع کوٹ محمدی کی یہ اراضی 1983میں ایکوائر کی گئی تھی تب موقع پر کسی قسم کی کوئی تعمیر نہ تھی ۔تفصیلات کے مطابق لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی سکیم سبزہ زار کے ڈی بلاک میں موضع کوٹ محمدی سلاٹر ہاؤس کے ساتھ 100کنال سے زائد اراضی پر قبضہ مافیا کا کنٹرول ہے جس پر قبضہ مافیا نے بڑی بڑی حویلیاں بنارکھی ہیں جبکہ اس جگہ پر ایل ڈی اے نے 1986میں تمام ڈویلپمنٹ مکمل بھی کی تھی جس میں سڑکیں واٹر سپلائی اور سیوریج شامل تھی اس وقت وہاں کوئی تعمیر نہ تھی لیکن 1990کے بعد قبضہ گروپ نے ایل ڈی اے کے اہلکاروں سے مل کر اس جگہ پر قبضہ کیا اور آہستہ آہستہ تعمیرات کو بڑھادیا اور یوں اتھارٹی کو اربوں کا نقصان پہنچایا۔ذرائع نے بتایا ہے جس جگہ پر قبضے کئے گئے ہیں اس اراضی کے عوض مالکان ایل ڈی اے سے پلاٹ بھی حاصل کر چکے ہیں اور جن لوگوں کے پلاٹ اس جگہ پر آتے ہیں وہ دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں اس حوالے سے جب موقعہ پر موجود لوگو ں سے بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ یہ ہماری جدی زمین ہے اور ہم اس پر پرانے بیٹھے ہیں جبکہ ایل ڈی اے نے زبردستی یہاں سکیم بنا ڈالی ہے ہمارا کیس کورٹ میں ہے اور ضرور فیصلہ ہمارے حق میں ہو گا جبکہ ایل ڈی اے افسران کا موقف مختلف تھا انہوں نے کہا کہ یہ جگہ ایل ڈی اے کی ہے ان خسرہ نمبران کا ایوارڈ 1983میں سنایا گیا تھا جبکہ 1986میں ایل ڈی اے نے یہاں پر تمام قسم کی ڈویلپمنٹ کی یہ جگہ قبضہ مافیا سے ضرور خالی کروائی جائے گی اراضی کا کیس کورٹ میں ہے جیسے ہی فیصلہ آتاہے اس کے مطابق کارروائی کی جائے گی

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -