ہونٹ سینے کا ڈرامہ ، پولیس نے علی عادل کی میو ہسپتال سے فرار کی کوشش ناکام بنادی

ہونٹ سینے کا ڈرامہ ، پولیس نے علی عادل کی میو ہسپتال سے فرار کی کوشش ناکام ...

  

 لا ہور (خبر نگا ر )لاہور پولیس نے ہونٹ سینے کے ڈرامے کے تخلیق کار علی عادل کی میو ہسپتا ل سے فرار ہونے کی کوشش ناکام بنا دی، عملے سے مزاحمت کرتا ر ہا جبکہ علی عادل کی میڈیکل ر پور ٹ منظر عا م پر آ گئی جس میں ڈاکٹروں نے زخموں کو خود ساختہ قرار دے دیا۔ پو لیس نے علی عادل کی سیکیورٹی میں اضافہ کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق سانگلہ ہل میں مبینہ طور پر مخالفین کے ہاتھوں تشدد اور ہونٹ سیے جانے کے واقعے کی تحقیقات جاری ہیں۔ابتدائی میڈیکل اور پولیس رپورٹ کے مطابق معاملہ مشکوک دکھائی دیتا ہے۔ ذرائع کے مطابق میو ہسپتا ل میں زیر علاج علی عادل نے جمعہ اورہفتے کی شب واش روم جانے کے بہانے فرار ہونے کی کوشش کی۔ وہ اپنی ماں کے ساتھ گاڑی میں بیٹھ کرہسپتا ل کے مین گیٹ کے قریب پہنچا تو پولیس اہلکاروں نے اسے پکڑ لیاجہا ں علی عا د ل نے پو لیس اہلکا رو ں کے ساتھ مزا حمت بھی کی ،اس واقعے کے بعدہسپتا ل میں علی عادل کی نگرانی کے لیے سیکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ علی عادل کی میڈیکل رپورٹ پولیس کو فراہم کردی گئی ہے جس میں ڈاکٹروں نے زخموں کو خود ساختہ قرار دے دیا ۔ابتدائی رپورٹ کے بعد اس معاملے پر بنائے گئے میڈیکل بورڈ نے بھی اپنی رپورٹ مرتب کرنا شروع کر دی ہے،میڈیکل بورڈ اپنی رپورٹ وزیر اعلیٰ پنجاب کو ارسال کرے گا ۔ذرائع کے مطابق میڈیکل بورڈ نے بھی علی عادل پر تشدد کو خود ساختہ قرار دے دیا، دوسری جانب پولیس نے علی عادل پر مبینہ تشدد کی مشکوک ویڈیو فرانزک لیب بھجوا دی ہے جس کے بعد یہ جاننے کی کوشش کی جائے گی کہ علی عادل پر ہونیوالا تشدد جعلی ہے یا اصلی۔ ذرائع کے مطابق ویڈیو میں علی عادل پر مبینہ تشدد کرنیوالے افراد کو بھی حراست میں لیا جائے گا جبکہ علی عادل کو علاج معالجے کے بعد تفصیلی تفتیش کیلئے حراست میں لیا جائے گا۔سانگلہ ہل پولیس کسی بھی وقت علی عادل کو بیان ریکارڈ کرنے کیلئے لاہورہسپتا ل سے لے جا سکتی ہے ادھرہسپتا ل میں علی عادل کی نگرانی پر تین پولیس ا ہلکار تعینات کر دئیے گئے ہیں۔ کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے پرنسپل ڈاکٹر فیصل مسعود کی سربراہی میں میڈیکل بورڈ زخموں کے حوالے سے اپنی رپورٹ وزیراعلی پنجاب کو جلد پیش کرے گا۔

مزید :

علاقائی -