امریکی ڈرون حملے، شمالی وزیرستان میں کمانڈر سمیت 5طلبان ہلاک، افغان صوبے ننگرہار میں بھی داعش کے 15جنگجو مارے گئے

امریکی ڈرون حملے، شمالی وزیرستان میں کمانڈر سمیت 5طلبان ہلاک، افغان صوبے ...

  

میران شاہ/اسد آباد(اے این این) شمالی وزیر ستان میں طویل وقفے کے بعد ایک بار پھر امریکی ڈرون حملہ ،کمانڈر سمیت5طالبان دہشت گرد ہلاک اورمکان تباہ ہو گیا جبکہ افغانستان کے دوصوبوں میں بھی امریکی جاسوس طیاروں کے حملوں کی اطلاع،4کمانڈروں سمیت19دہشت گرد ہلاک،مارے جانے والوں کی اکثریت کا تعلق پاکستانی طالبان سے تھا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ہفتہ کو امریکی ڈرون طیارے نے شمالی وزیرستان کے علاقے منگڑوتی میں ایک مکان پر دو میزائل داغے جس کے نتیجے میں مکان مکمل تباہ ہو گیا اور اس میں موجود کالعدم تحریک طالبان کے 5دہشت گرد مارے گئے ۔ذرائع کے مطابق مارے جانیوالوں میں ٹی ٹی پی کا کمانڈر مولانا نورسعید خان جانی خیل بھی شامل ہے ۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی ڈرون طیارے نے خیبر ایجنسی سے ملحقہ افغان صوبے ننگرہار کے علاقے اچین میں داعش کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔ حملے میں داعش کے 15 دہشت گردوں کی ہلاکت اور متعدد کے زخمی ہونے کے ساتھ ساتھ ان کے کئی ٹھکانوں کو تباہ کرنے کا بھی دعوی کیا گیا ہے ۔دریں اثناء افغان صوبے کنڑ میں بھی امریکی ڈرون حملے میں پاکستانی طالبان کے ٹھکانوں کونشانہ بنایا گیا ہے جس میں 4طالبان کمانڈرز کے مارے جانے کی اطلاعات ہیں ۔افغان میڈیا کے مطابق کنڑ کے صوبائی پولیس چیف کرنل عبدالحمید سید خیل نے ڈرون حملے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ واقعہ ضلع شلٹن کے علاقے چرگام میں پیش آیا ہے جس میں 4پاکستانی طالبان مارے گئے ہیں ۔

مزید :

صفحہ اول -