جے یو آئی کے سابق سیکرٹری اطلاعات سمیت 5 افراد کیخلاف مقدمہ درج

جے یو آئی کے سابق سیکرٹری اطلاعات سمیت 5 افراد کیخلاف مقدمہ درج

  

ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)گومل یونیورسٹی پولیس نے ایس ڈی اومحکمہ سی اینڈڈبلیوروڈون گل قدیرکی رپورٹ پرجے یوآئی کے سابق سیکرٹری اطلاعات اشفاق ایڈووکیٹ سمیت پانچ افرادکیخلاف گائیڈڈبنددھپانوالہ سے دس لاکھ روپے کی سرکاری مٹی اٹھاکربندکونقصان پہنچانے کامقدمہ درج کرادیا‘مقدمہ سیاسی بنیادوں پرمیری ساکھ کوخراب کرنے کیلئے میری یونین کونسل میں میرے مقابلے میں پی ٹی آئی کی سیٹ پرالیکشن لڑنے والے ڈاکٹرانورعلی کے ایس ڈی اوبھائی نے بنایاہے۔اشفاق ایڈووکیٹ۔تفصیلات کے مطابق تھانہ گومل یونیورسٹی میں محکمہ سی اینڈڈبلیوکے ایس ڈی اوروڈون گل قدیرنے 431-427/34PPCکے تحت جے یوآئی کے سابق ضلعی سیکرٹری اطلاعات اشفاق ایڈووکیٹ‘سیدساجدعلی‘ڈاکٹرغلام عباس میانہ کے بیٹے سمیت پانچ افرادکیخلاف درج کرایاہے اورکہاہے کہ ملزمان نے گائیڈڈبنددھپانوالہ کے قریب سرکاری مٹی جسکی مالیت دس سے بارہ لاکھ روپے بنتی ہے کواٹھاکرسرکاری بندکونقصان پہنچایا۔جے یوآئی کے سابق ضلعی سیکرٹری اطلاعات اشفاق ایڈووکیٹ نے میڈیاکوبتایاکہ سی اینڈڈبلیوکے ایس ڈی اوگل قدیرنے سیاسی مخالفت کی بنیادپرانکے خلاف جھوٹامقدمہ درج کرایاہے وہ میری ساکھ کونقصان پہنچاناچاہتے ہیں۔میں نے کوئی سرکاری مٹی نہیں اٹھائی۔اتنی بڑی مالیت کی مٹی اٹھائی گئی لیکن محکمہ کیاسورہاتھا۔یہ انکی اپنی غفلت ہے۔میرے مقابلے میں میری یونین کونسل میں حالیہ بلدیاتی انتخابات کے دوران گل قدیرایس ڈی اوکابھائی پی ٹی آئی کی سیٹ پرممبرضلع کونسل کیلئے میرے مقابلے میں تھا۔گل قدیرخان کے پاس اگرمیرے حوالے سے کوئی گواہ ہے توسامنے لائے۔میں اپنے خلاف ہونیوالے مقدمے کیلئے قانونی حق محفوظ رکھتاہوں۔

مزید :

پشاورصفحہ اول -