پنجاب لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ بورڈ مویشی پال کسانوں کیلئے ٹرینڈ سیٹر بن گیا

پنجاب لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ بورڈ مویشی پال کسانوں کیلئے ٹرینڈ سیٹر ...

  

یری ڈویلپمنٹ بورڈ کی قائم مقام چیف ایگزیکٹو آفیسر ایم پی اے سائرہ افتخار نے یہاں ایک مقامی ہوٹل میں لائیو سٹاک بورڈ کی سالانہ کارکردگی اور مستقبل کے اہداف کے حوالے سے میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ لائیو سٹاک بورڈ مویشی پال کسانوں کے لئے ٹرینڈ سیٹر بن چکا ہے‘ ہم کسانوں کو جدید لائیو سٹاک فارمنگ اور چارہ جات کے متعلق آگاہی کے ساتھ ساتھ عملی کارکردگی دکھا رہے ہیں جس سے نہ صرف ان کے جانوروں کی صحت بہتر ہو رہی ہے بلکہ ان کے دودھ اور گوشت کی پیداوار میں بھی اضافہ ہو رہاہے۔ گزشتہ سال لائیو سٹاک بورڈ نے مویشیوں کی غذائی ضروریات پوری کرنے کے لئے اہم منصوبہ جات شروع کئے جن میں سرفہرست چھوٹے مویشی پال کسانوں کے لئے 60 کلوگرام سائیلج کی گانٹھ اور بڑے کمرشل فارمر کے لئے ایک ٹن سائیلج کی گانٹھ متعارف کروائی اور اسے چھوٹے بڑے کسانوں تک پہنچانے کے لئے ڈسٹری بیوشن نیٹ ورک قائم کیا جس سے اس کی ترسیل رعایتی نرخوں میں پنجاب کے تمام اضلاع سمیت خیبرپختونخوا اور کراچی میں بھی یقینی بنائی گئی۔ دودھ کی پیداوار کے حوالے سے انہوں نے بتایاکہ تجرباتی لائیو سٹاک فارم خضر آباد میں فی جانور دودھ کی پیداوار پانچ کلو سے بڑھ کر 8.4 کلو فی مویشی تک پہنچ چکی ہے۔ جنوبی پنجاب میں سائیلج کی مارکیٹنگ اور کسانوں کی آگاہی و تربیت کے لئے اینگرو فوڈز کے ساتھ معاہدہ طے پا چکا ہے جس کے تحت جنوبی پنجاب کے ہر گاؤں میں سائیلج سستے داموں فراہم کیا جائے گا اور کسانوں کو سائیلج خود تیار کرنے اور جانوروں کی غذائی ضروریات پوری کرنے کے لئے ان کے علاقوں میں سیمینار منعقد کروائے جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ لائیو سٹاک بورڈ نے ایگریکلچرل انڈسٹری اور ریسرچ سکالرز کے ساتھ مضبوط رابطہ کے لئے ان کی ریسرچ کو لائیو سٹاک انڈسٹری میں استعمال کرنے کے لئے یونیورسٹی آف ایگریکلچرل فیصل آباد کے ساتھ مفاہمتی یادداشت پر دستخط بھی ہو چکے ہیں۔

جس کے تحت جانوروں کے چارہ جات پر دونوں ادارے مل کر کام کریں گے۔ لائیو سٹاک بورڈ نے ایک نئے منصوبے ’’فوڈز اینڈ ڈی سیل‘‘ (Fodder Research & Development Cell) پر کام شروع کردیا ہے جس کے تحت پنجاب بھر میں پائی جانیوالی فصلوں کی باقیات کی ویلیو ایڈیشن سے معیاری اور سستے ترین ونڈے کی شکل میں تبدیل کیا جائے گا جس سے جانوروں کو معیاری اور سستا ونڈا میسر آئے گا ۔ انہوں نے کہاکہ آئی سی آئی پاکستان کے سیمن پروڈکشن یونٹ خضر آباد کو بین الاقوامی معیار کے مطابق چلانے کیلئے معاہدہ پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ سیل میں ہے جو بہت جلد پایہ تکمیل تک پہنچ جائے گا جس کے بعد مقامی سطح پر بین الاقوامی معیار کا سیمن تیار کیا جائے گا جس سے اچھی نسل کے جانور کسانوں کو میسر آئیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ ایک سال کی محنت اور بہتر مینجمنٹ سے لائیو سٹاک بورڈ خسارے سے نکل کر 50 ملین منافع میں آچکاہے۔ انہوں نے بتایا کہ سال 2017ء کے لئے ہم نے اپنے اہداف طے کر لئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ فروری 2017ء میں ورلڈ بنک کی ٹیم دوبارہ لائیو سٹاک بورڈ کا دورہ کریگی اور متعین کردہ سات ایریاز میں لائیو سٹاک بورڈ کے ساتھ ملکر کام کریں گے اس لئے ہمیں امید ہے کہ اسی سال ورلڈ بنک کے ساتھ بھی کوئی منصوبہ شروع کر دیں گے۔

مزید :

کامرس -