پاکستان ضرورت سے زائد یوریا کھاد تیار کرنے والا ملک بن چکا ہے

پاکستان ضرورت سے زائد یوریا کھاد تیار کرنے والا ملک بن چکا ہے

  

اسلام آباد (اے پی پی) توانائی کی فراہمی کی صورتحال میں بہتری کے نتیجے میں پاکستان ضرورت سے زائد یوریا کھاد تیار کرنے والا ملک بن چکا ہے۔ اے کے ڈی سکیورٹیز کی رپورٹ کے مطابق ملک میں یوریا کھاد کی طلب 5.6 ملین ٹن ہے جبکہ اس کی پیداوار 6 ملین ٹن سے تجاوز کر چکی ہے ۔ سال 2016 ء کے دوران یوریا کھاد تیار کرنے والی صنعت کی کارکردگی میں 14 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور رواں سال 2017ء کے دوران یوریا کھاد کی مقامی پیداوار 6.3 ملین ٹن تک بڑھنے کی توقع ہے۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ 3 سال کے دوران زرعی شعبہ کی کارکردگی کے متاثر ہونے کے باعث کھاد کی فروخت میں کمی واقع ہوئی تھی تاہم سال 2016ء کی آخری ششماہی کے دوران زرعی شعبہ کی کارکردگی میں اضافہ کے باعث کھاد کی پیداوار اور فروخت میں نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ اے کے ڈ ی کی رپورٹ کے مطابق سال 2016ء ابتدائی 5 مہینوں کے دوران کھادوں کی فروخت میں 32 فیصد کی کمی واقع ہوئی تھی جبکہ جولائی تا نومبر کے دوران فروخت میں 28فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق کھادوں کی مجموعی فروخت میں 3فیصد کے اضافے سے فروخت کا مجموعی حجم نومبر 2016ء کے اختتام تک 7.83 ملین ٹن تک پہنچ گیا جبکہ یوریا کھاد کی فروخت کا حجم 4.59 ملین ٹن ریکارڈ کیا گیا ہے۔ کھادوں کی مقامی پیداوار میں اضافہ کے باعث درآمدات میں کمی کے نتیجے میں قمیتی زر مبادلہ کی بچت ہوگی جبکہ مقامی ضروریات سے زائد کھادوں کی برآمدات سے زر مبادلہ کما کر ملکی معیشت کے استحکام میں بھی مدد حاصل ہو گی۔

مزید :

کامرس -