بزنس کمیونٹی کیلئے آسانیاں کی بجائے مشکلات پیدا کی جا رہی ہیں ‘ پیاف

بزنس کمیونٹی کیلئے آسانیاں کی بجائے مشکلات پیدا کی جا رہی ہیں ‘ پیاف

  

لاہور ( این این آئی)پیاف کے چیئرمین عرفان اقبال شیخ نے کہا ہے کہ بزنس کمیونٹی مشکلات کے باوجود ملکی معیشت کی ترقی میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے، ٹیکس دینے کے باوجود بزنس کمیونٹی ہراسمنٹ کا شکار ہے گورنمنٹ کے چند ادارے سیکشن 38 بی اور40 بی کے زور پربزنس کمیونٹی کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کی بجائے مشکلات پیدا کر رہے ہیں جسکی وجہ سے صنعتکار اور تاجر برادری نہایت پریشان ہیں،سیکشن 38b کے تحت با اختیار افسران کاروباری افراد کے دفاتر اور مینوفیکچرنگ یونٹس، سٹاکس، اکاؤنٹس اور ریکارڈز تک رسائی رکھتے ہیں اور متعلقہ سامان اور ریکارڈ ضبظ کر کے دھمکیاں دیتے ہیں جو سراسر ناانصافی ہے۔چیئر مین پیاف عرفان اقبال شیخ نے گزشتہ روز سینئر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئرمین خواجہ شاہزیب اکرم کے ہمراہ کہا کہ بزنس کمیونٹی ڈیوٹیوں اور اور دیگر ٹیکسوں کی ادائیگی کے باوجود ایف بی آر کے ماتحت ادارے صنعتوں کو ترسیل کئے جانیوالے خام مال اور فنشڈ پراڈکٹس سے لدی گاڑیوں کو روک کر ڈائیوروں سے تمام درآمدی دستاویزات طلب کرتے ہیں۔

اور متعلقہ دستاویزات نہ ہونیکی صورت میں سپیڈ منی وصول کی جاتی ہے ۔ پیاف کے عہدیداران نے وزیر اعظم، چیئر مین ایف بی آر،اور وزیر اعلیٰ پنجاب سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس سنگین معاملے پر فوری طور پر توجہ دیتے ہوئے کاروباری افراد کے احاطوں پر بلا جواز چھاپے بند کرائیں کیونکہ اس سے کاروباری ماحول خراب ہوتا ہے بزنس کمیونٹی پریشان رہی ہے اور کرپشن کو بھی ہوا ملتی ہے چیئر مین پیاف عرفان اقبال شیخ نے مزید کہا کہ ہم تمام مسائل کے حل کیلئے حکومت کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں اورملک کو بحرانوں سے نکالنے میں پہلے ہی اپنا فرض ادا کر رہے ہیں۔

مزید :

کامرس -