بھارتی پیراملٹری کا پیلٹ گن کے استعمال کیلئے طے شدہ قواعد وضوابط کے بارے میں معلومات فراہم کرنے سے انکار

بھارتی پیراملٹری کا پیلٹ گن کے استعمال کیلئے طے شدہ قواعد وضوابط کے بارے میں ...

  

نئی دلی(اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں تعینات بھارت کی پیراملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس نے پیلٹ گن کے استعمال کیلئے طے شدہ ایس او پی اور کشمیر میں مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے استعمال کئے جانے والے ہتھیاروں کے بارے میں معلومات فراہم کرنے سے انکار کردیا ہے ۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق انسانی حقوق کے ایک کارکن ونکٹیش نائک نے حق اطلاعات کے تحت معلومات حاصل کرنے کیلئے درخواست دی تھی ۔انسانی حقوق کارکن ونکٹیش نائک نے پیلٹ گنوں کے بڑے پیمانے پر استعمال کے نتیجے میں زخمی ہونے والے افراد کی تعداد کو دیکھتے ہوئے پیلٹ گن چلانے کیلئے طے شدہ ایس او پی اور یکم جولائی 2016سے ابتک مظاہرین کے خلاف استعمال کئے گئے ہتھیاروں کی مقدار کی تفصیل مانگی تھی۔ ونکٹیش نائک نے عہدے کے اعتبار سے زخمی ہونے والے سی آر پی ایف اہلکاروں کی فہرست بھی طلب کی تھی۔

سینٹرل انفارمیشن آفیسر نے اپنے جواب میں لکھا ہے کہ اس کیس میں نہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور نہ ہی رشوت ستانی کا کوئی ذکر ہے اسلئے مذکورہ محکمہ حق اطلاعات 2005کے تحت کوئی بھی معلومات فراہم کرنے کا پابند نہیں ہے۔ انفارمیشن آفیسر کی طرف سے اٹھائے گئے سوالات کے جواب میں انسانی حقوق کارکن نائک نے کہا کہ ایس او پی کو صیغہ راز میں رکھا جارہا ہے کوئی انسان کیسے یہ فیصلہ کرسکتا ہے کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور طاقت کا زیادہ استعمال ہوا ہے یا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ بغیر کسی خطا کے زخمی ہونے والے کیسے معاوضے اورفورسز اہلکاروں کو جواب دہ بنانے کا مطالبہ کرسکتے ہیں جب انہیں کوئی معلومات ہی فراہم نہیں کی جارہی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -