کسٹم حکام کی ملی بھگت،ائیر پورٹ پر مسافروں کی قیمتی اشیا ء چوری ہونے لگیں

کسٹم حکام کی ملی بھگت،ائیر پورٹ پر مسافروں کی قیمتی اشیا ء چوری ہونے لگیں

  

لاہور (سپیشل رپورٹر)علامہ اقبال انٹر نیشنل ائیر پورٹ لاہور پرکسٹم مافیا کی چا ندی ہو گئی ،اندرون وبیرون ممالک جانے والے مسافروں کو ممنوع اشیاء کے نام پر چیکنگ کے دوران شدید مشکلات کا سامنا ہے، ایف آئی اے کا عملہ پاسپورٹ و دیگر کاغذات پر طرح طرح کے اعتراضات لگا کر منہ مانگے دام وصول کرنے میں مصروف ہیں، ڈیوٹی پر موجود کسٹم ،ایف آئی ا ے اور اے ایس ایف کے عملہ کی مبینہ کرپشن کے ہاتھوں تنگ مسافروں کا حکام بالا سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ ائیر پورٹ لاہو ر سے پاکستان میں بیرون ممالک روزگار کے سلسلہ میں جانے اور واپس اپنے ملک میں فیملی کو ملنے کے لیے آنے والے پاکستانی مختلف تحا ئف لے کر جب ائیر پورٹ لاہور پہنچتے ہیں تو وہاں پر موجود تعینات عملہ مختلف بہانوں سے ان کے سامان کی چیکنگ میں لگ جاتا ہے یہاں تک کہ مسافروں کے سامان سے قیمتی اشیاء پرفیوم،موبائل فون اور دیگر اشیاء غائب ہو جاتی ہیں،مسافروں کے تکرار کرنے پر انہیں کئی گھنٹے کسٹم،ایف آئی اے اور اے ایس ایف کے عملہ کے سامنے پیشیاں بھگتنا پڑتی ہیں، جس کے باعث مسافر تنگ ہو کر یا تو اپنا سامان چھوڑ جاتے ہیں یا پھر ان کو منہ مانگے دام دینے پڑتے ہیں۔ذرائع کے مطابق بعض اوقات ایف آئی اے کا عملہ بیرون ممالک جانے والے شریف شہریوں کے پاسپورٹ پر طرح طرح کے اعتراضات لگا کربھاری رشوت طلب کرتے ہیں جبکہ مجبور ہو کران مسافروں کو ادا کرنے پڑتے ہیں جبکہ ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ اے ایس ایف کے اہلکار سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر دور دراز علاقوں سے آنے والے مسافروں کے ساتھ سائلین کو مین گیٹ پر ہی اتار دیتے ہیں اور اکیلے مسافر کو جانے کی اجازت دیتے ہیں جس کی وجہ سے دور دراز علاقوں کے شہریوں کو سردی کے موسم میں شدید سردی کے باعث مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔اس حوالے سے ڈپٹی کلکٹرکسٹم نوید الرحمن کا کہنا ہے کہ ان باتوں میں کوئی صداقت نہیں ہے ،معمول کے مطابق عملہ چیکنگ کے فرائض سرانجام دیتاہے ،انہوں نے مزید کہا کہ مسافروں کے ممنوعہ اشیاء لانے پرپابندی ہے جس پر سختی سے عمل جاری ہے ۔

مزید :

علاقائی -