حکومت کا فوجی عدالتوں کے قیام میں توسیع کیلئے آئینی ترمیم کا فیصلہ ،سیاسی جماعتوں کے ساتھ مشاورت شروع

حکومت کا فوجی عدالتوں کے قیام میں توسیع کیلئے آئینی ترمیم کا فیصلہ ،سیاسی ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت نے فوجی عدالتوں کے قیام میں توسیع کیلئے آئین میں ترمیم کا فیصلہ کرلیا ہے ، آئینی ترمیم سیاسی جماعتوں سے مشاورت کے بعد کی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم ہاؤس میں وزیر اعظم نواز شریف کے زیر صدارت پاکستان کی خارجہ پالیسی سے متعلق اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں ملکی اندرونی و بیرونی سیکیورٹی صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور کاؤنٹر ٹیرارزم آپریشنز کے بھرپور ثمرات حاصل کرنے پر بھی غور کیا گیا۔اجلاس میں وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار، مشیر خارجہ سرتاج عزیز ، وزیر اعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی، مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر خان جنجوعہ سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔اجلاس کے شرکا نے پاکستان کی دہشتگردی و انتہا پسندی کے خلاف زیرو ٹالرینس کی پالیسی کو داخلی و خارجہ پالیسی کا حصہ بنانے کے عزم کا اظہار کیا جبکہ یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ اس پالیسی کو بھرپور صلاحیتوں کے ساتھ نافذ کیا جائے گا۔اجلاس میں اس امر پر زور دیا گیا کہ فوجی عدالتوں نے دہشتگردی و انتہا پسندی کیخلاف اور آپریشن ضرب عضب کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔ وفاقی حکومت نے فوجی عدالتوں کو توسیع دینے کیلئے پہلے ہی آئین میں ترمیم کیلئے مشاورت شروع کردی ہے اور تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت کے بعد پارلیمینٹ سے اس کی باقاعدہ منظوری لی جائے گی۔شرکا نے اس عزم کا بھی اظہار کیا کہ داخلی امن کیلئے تمام قوتیں بروئے کار لاتے ہوئے خطے میں استحکام کیلئے اہم کردار ادا کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ اول -