ترقیاتی ممالک میں بلدیاتی ادارے مسائل کے حل میں کلیدی کردار کے حامل ہیں:عنایت اللہ

ترقیاتی ممالک میں بلدیاتی ادارے مسائل کے حل میں کلیدی کردار کے حامل ...

  

چارسدہ (بیورورپورٹ)خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر بلدیات و دیہی ترقی عنایت اللہ نے کہا ہے کہ ترقی یافتہ ممالک میں بلدیاتی ادارے عوام کے مسائل کے حل میں کلیدی کردار ادا کرتے ہیں لہذا ضرورت اس امر کی ہے کہ ہمارے بلدیاتی ادارے بھی اس ضمن میں اپنا موثر کردار ادا کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سرد دریاب گل آباد چارسدہ میں ضلعی محکموں کے افسروں اور منتخب نمائندوں کے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سابق ممبر صوبائی اسمبلی ارشد خان،ناظم فہد خان،نائب ناظم مصور شاہ،منتخب کونسلرز اور ضلعی محکموں کے افسران نے شرکت کی۔ سابق ممبر صوبائی اسمبلی ارشد خان نے کہا کہ ہمیں ضلع چارسدہ کے عوام کا مفاد انتہائی عزیز ہے لہذا صوبائی حکومت اور ضلعی افسران ضلع چارسدہ کی ترقی و خوشحالی کے لئے باہمی روابط جاری رکھیں ۔انہوں نے ضلع چارسدہ میں جنگلات اور اسلامیہ کالج کے لئے وقف اراضی اور ضلع چارسدہ کے عوام کیلئے کالج کوٹے میں اضافہ کا مطالبہ پیش کیا جبکہ نائب ناظم نے اختتامی خطبہ پیش کرتے ہوئے عوام کے مسائل کے بارے میں صوبائی وزیر کو آگاہ کیا۔سینئر وزیر نے تمام ضلعی افسروں پر زور دیا کہ وہ عوام کو مقامی سطح پر بنیادی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنائیں تاکہ بلدیاتی اداروں کی بحالی سے عوام ترقی کے نئے دور میں داخل ہوں۔عنایت اللہ نے کہا کہ ضلع چارسدہ کی مٹی بہت ذرخیز ہے اور یہ باصلاحیت و با شعور لوگوں کا مسکن ہے یہاں زراعت،جنگلات،بلدیات اور دیگر شعبوں میں ترقی کے کئی مواقع موجود ہیں لیکن انہیں جلد از جلد استعمال میں لانے کی ضرورت ہے۔سینئر وزیر نے لوڈ شیڈنگ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جن علاقوں میں ریکوری تسلی بخش ہو وہاں اصولاً لوڈ شیڈنگ نہیں ہونی چاہیے۔انہوں نے متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ وہ اس ضمن میں عوام کو بے جا تنگ نہ کریں اور عوام کی شکایات کا ازالہ کریں۔انہوں نے ناظمین اور افسران کو عوام کے اجتماعی نوعیت کے مسائل حل کرنے کی ہدایت کی۔عنایت اللہ نے کہا کہ عوام کو صاف ستھرا ماحول اور بنیادی سہولیات کی فراہمی ریاست کی اولین ذمہ داری ہے۔انہوں نے محکمہ بلدیات کے افسران کو ریونیو میں اضافے کی ہدایت کی۔قبل ازیں سینئر صوبائی وزیر کو بلدیات، صحت، تعلیم، ایریگیشن، واپڈا، جیل، مینرل ، زکواۃ اور دیگر محکموں کی طرف سے بریفنگ دی گئی۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -