وہ پاکستانی جسے فحش فلمیں بنانے والی کمپنیاں کروڑوں روپے دے کر اپنی فلموں میں شامل کرنا چاہتی ہیں، لیکن کیوں؟ جواب کوئی پاکستانی سوچ بھی نہیں سکتا

وہ پاکستانی جسے فحش فلمیں بنانے والی کمپنیاں کروڑوں روپے دے کر اپنی فلموں ...

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ایک پاکستانی شخص کو فحش فلمیں بنانے والی کمپنیاں اپنی فلموں میں شامل کرنا چاہتی ہیں اور اس کے لیے اسے کروڑوں روپے کی پیشکش کر چکی ہیں۔ اس شخص میں ان کی دلچسپی کی وجہ ایسی ہے کہ سن کر آپ ششدر رہ جائیں گے۔ ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق یہ شخص 44سالہ محمد عابد ہے۔ بچپن میں ایک ٹریفک حادثے میں اس کے جسم کا مردانہ حصہ ضائع ہو گیا تھا۔ یہ سڑک کے درمیان میں گرا اور پیچھے سے آنے والی ایک کار آدھے کلومیٹر تک اسے گھسیٹتی ہوئی لے گئی تھی۔

اب تک محمد عابد مردانگی سے محروم رہا لیکن گزشتہ سال اس نے آپریشن کروا کر 70ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 1کروڑ 5لاکھ روپے) کی لاگت سے مصنوعی عضو لگوا لیا ہے۔ اس ’سٹیٹ آف دی آرٹ‘ عضو کے لگنے پر فحش فلم انڈسٹری کی اس میں دلچسپی انتہائی بڑھ گئی ہے اور وہ اسے اپنی فلموں میں بہرصورت شامل کرنا چاہتے ہیں۔تاہم محمد عابد نے ان کی پیشکش مسترد کر دی ہے۔واضح رہے کہ محمد عابد ایڈنبرا میں رہائش پذیر ہے اور وہاں جاب کرتا ہے جبکہ اس کا خاندان پاکستان میں ہی مقیم ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...