پنجاب میں 18سال س کم عمر لڑکا، لڑکی بچے تصور کیے جائیں گے 

پنجاب میں 18سال س کم عمر لڑکا، لڑکی بچے تصور کیے جائیں گے 

  



لاہور(آئی این پی) پنجاب میں 18 سال سے کم عمر لڑکا اور لڑکی بچے تصور کیے جائیں گے، محکمہ قانون پنجاب نے چائلڈ میرج ایکٹ 1929 میں ترمیم کی منظوری دے دی۔وفاقی حکومت کی جانب سے پنجاب حکومت کو کم عمر بچوں کی شادیوں کے حوالے سے قانون سازی کی ہدایت کی گئی تھی، جس پر پنجاب حکومت نے چائلڈ میرج ایکٹ 1929 میں ترمیم کا فیصلہ کیا ترمیم کے مطابق 18 سال سے کم عمر لڑکے اور لڑکیوں کی شادی نہیں ہوسکے گی، 18 سال سے کم عمر شادی کرنے کو زبردستی تصور کیا جائے گا اور ملوث افراد کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی، حتمی منظوری کے لئے سمری کابینہ کمیٹی کو بھجوائی جائے گی۔

چائلڈ میرج ایکٹ

مزید : صفحہ آخر


loading...