محکمہ زراعت پنجاب نے جنوری کے پہلے پندھرواڑے کیلئے حکمت عملی جاری کردی

محکمہ زراعت پنجاب نے جنوری کے پہلے پندھرواڑے کیلئے حکمت عملی جاری کردی

  



 لاہور (لیڈی رپورٹر) محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ کپاس،مکئی اور کماد کے بعد گندم کو پہلا پانی شگوفے نکلتے وقت یعنی بوائی کے 20 تا25دن بعد کریں اور دھان کے بعد کاشتہ فصل کو35 تا45 دن بعد آبپاشی کریں اور پچھتی کاشت کے بعد پہلا پانی بوائی کے 25تا30 دن بعد لگائیں۔ترجمان کے مطابق کمزور زمین میں پہلے پانی کے ساتھ ایک بوری یوریا،اوسط زرخیز زمین میں پونی بوری یوریا جبکہ زرخیز زمین میں آدھی بوری یوریا فی ایکڑ ڈالیں۔بارانی علاقوں میں جڑی بوٹیوں کی تلفی بذریعہ گوڈی کریں۔آبپاش علاقوں میں چوڑے پتوں اور نوکیلے پتوں والی جڑی بوٹیوں کی تلفی کیلئے محکمہ زراعت کے مقامی عملے کے مشورے سے جڑی بوٹی مار زہروں کا سپرے کریں۔

یاد رہے وزیر اعظم پاکستان کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت محکمہ زراعت پنجاب نے کاشتکاروں کو جڑی بوٹی مار زہروں پر 250روپے فی ایکڑ سبسڈی بھی فراہم کی ہے۔سپرے کے دوران کسی بھی دوہری جگہ سپرے نہ کریں اور نہ کوئی خالی جگہ رہے۔تیز ہوا، دھند یا بارش والے دن سپرے نہ کیا جائے اور جڑی بوٹی مارزہروں کے سپرے کیلئے 100تا120 لٹر پانی فی ایکڑ استعمال کریں۔معیاری سپرے کیلئے مخصوص نوزل  فلیٹ فین یا ٹی جیٹ نوزل کا استعمال کریں۔کاشتکار زہر کے چھڑکاؤ کے بعد گوڈی یا بار ہیرو کے استعمال سے پر ہیز کریں۔

مزید : کامرس